تصاویر: بصارت سے محروم جوڈو کے ستارے

بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers

انڈیا کے دیہی علاقوں میں بصارت سے محروم خواتین اپنا دفاع خود کرنے کی تکانیک سیکھ رہی ہیں۔

بصارف سے محروم ہونے کی وجہ سے انھیں اکثر جسمانی اور جنسی تشدد کے خطرے کا زیادہ سامنا رہتا ہے اور بہت سی خواتین ایسی ہیں جو اکیلے گھر سے باہر جانے کے قابل نہیں ہیں۔ تاہم دفاعی تدابیر اور اپنی حفاظت کی تکنیک سیکھنے کے بعد 60 سے زائد خواتین دوبارہ سکول گئیں، نوکریاں حاصل کیں اور معاشرے میں اپنا کردار ادا کرنے کے قابل ہوئی ہیں۔

ان میں سے کئی نے قومی سطح پر منعقد ہونے والے مقابلوں میں شرکت کی، میڈلز جیتے اور اپنے علاقے میں بصارت سے محروم خواتین کو رہنمائی فراہم کر رہی ہیں۔

بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers
بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers
بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers

سدما نے سنہ2014 میں جوڈو سیکھنا شروع کیا تھا اور اس وقت سے ان کے اعتماد میں بھرپور اضافہ ہوا ہے۔ وہ دوبارہ سکول جانے کے قابل ہوئیں۔ اس سے قبل وہ سکول نہیں جا سکتی تھیں کیونکہ ان کے والدین کام پر جاتے تھے اور روازنہ انھیں سکول پہنچانے والا کوئی اور رشتے دار نہیں تھا۔

وہ کہتی ہیں: ’جوڈو سیکھنے سے پہلے میں سوچا کرتی تھی کہ میں باہر کیسے جاؤں؟ میری زندگی کا کیا ہوگا؟ میں اکیلے سکول جاتے ہوئے ڈر لگتا تھا۔ میرے والد اور والدہ مجھے اس کی اجازت نہیں دیتے تھے، کیونکہ وہ بہت دور تھا۔‘

سکول کے واپسی پر سدما نے اپنی دوستوں کو جوڈو سکھانا شروع کر دیا اور بعدازاں ٹرینر بن گئیں۔ وہ دہلی، گوا، گروگرام اور لکھنئو میں طلائی اور چاندی کے تمغے جیت چکی ہیں۔

بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers
بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers
بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers

نئی دہلی میں منعقدہ نیشنل بلائینڈ جوڈو چیمپیئن شپس جیتے کے بعد ان نوجوان خواتین کو اپنے اپنے علاقوں میں بھرپور پذیرائی حاصل ہوئی۔

تاہم انھیں اب بھی کئی چیلنجز کا سامنا ہے۔ دو سال کی تربیت کے بعد 20 سالہ جانکی نے نیشنل بلائینڈ اینڈ ڈیف جوڈو چیمپیئن شپس میں طلائی تمغہ جیتا۔

حال ہی میں انھیں ترکی میں منعقدہ ہونے والے انٹرنیشنل بلائینڈ چیمپیئن شپس میں شرکت کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔ لیکن ان کے خاندان کے لیے ان کے اس سفر کر لیے فنڈز اکٹھا کرنا خاصا مشکل ہے۔

تاہم جانکی پرامید ہیں: ’مجھے بہت خوشی ہے کہ میں نے اپنی ملک کی نمائندگی کی۔‘

’میں نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ جوڈو کھیلنے اور اپنا دفاع سیکھنے کے بعد میری زندگی اتنی بدل جائے گی۔‘

بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers
بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers
بصارت سے محروم جوڈو ستارے تصویر کے کاپی رائٹ Arko Datto / Noor / Sightsavers

جوڈو سکھانے کی یہ کلاسیں فلاحی تنظیم سائیٹ سیورز اور مقامی پارٹنرز ترن سنسکار کی مدد سے منعقد کی جاتی ہیں۔ تمام تصاویر ارکو ڈٹو / نور فار سائیٹ سیورز کی ہیں۔ تمام تصاویر کے جملہ حقوق محفوظ ہیں۔

اسی بارے میں