کابل: نوروز پر مزار کے قریب خودکش دھماکے میں 29 ہلاک

کابل تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک مزار کے قریب ہونے والے خودکش دھماکے میں 29 افراد ہلاک اور 50 سے زیادہ زخمی ہوئے ہیں۔

بدھ کو یہ خودکش حملہ کابل کے سخی مزار کے قریب اُس وقت ہوا جب وہاں جشنِ نوروز منایا جا رہا تھا۔

وزارتِ داخلہ کے نائب ترجمان نصرت رحیمی نے بتایا کہ یہ حملہ مقامی وقت کے مطابق دوپہر 12 بج کر 40 منٹ پر ہوا۔

* کابل میں مزار پر حملے میں 14 افراد ہلاک

* کابل میں ایمبولینس بم کے دھماکے میں 95 افراد ہلاک

* کابل:خفیہ ایجنسی کے دفتر کے قریب دھماکہ، دس افراد ہلاک

انھوں نے بتایا کہ ایک خودکش حملہ آور پیدل چلتا ہوا آیا اور وہ مزار کے اندر موجود افراد کو نشانہ بنانا چاہتا تھا۔

نائب ترجمان کا کہنا تھا کہ اپنے ہدف تک پہنچنے سے قبل ہی سکیورٹی فورسز نے خودکش حملہ آور کو روکا تو اُس نے کابل یونیورسٹی کے نزدیک علی آباد ہسپتال کے قریب اُس نے اپنے آپ کو دھماکہ خیز مواد سے اڑا لیا۔

حکام نے اب تک اس حملے میں 29 افراد کی ہلاکت اور 52 کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے۔ زخمیوں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ نے اس واقعے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

کابل کے سخی مزار کا شمار شہر کے بڑے مزاروں میں ہوتا ہے۔

اس سے قبل بھی سخی مزار پر یومِ عاشورہ کے موقع ہونے والے دھماکے میں درجن سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اس حملہ میں مزار میں موجود شیعہ عزاداروں کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں