چین: ڈریگن کشتی کے حادثے میں 17 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

جنوبی چین میں ایک ڈریگن کشتی کے حادثے میں 17 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ حادثے کے بارے میں خیال کیا جا رہا ہے کہ اس کی وجہ کشتی کو لگنے والا بجلی کا شدید جھٹکا ہو سکتا ہے۔

ٹی وی پر دکھائی جانے والی تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ سنیچر کے روز ایک لمبی کشتی جو کہ کشتی رانوں سے بھری ہوئی تھی پانی میں الٹ گئی جبکہ دوسری جانب سے اسی مقام پر آنے والی ایک اور کشتی بھی ڈوب گئی۔

گوئلن شہر میں دریا کے بالکل بیچ میں کل 60 افراد پانی میں تقریباً ڈوب گئے تھے۔

امدادی کارکنوں نے 40 افراد کو پانی سے نکال لیا تھا۔

چینی خبر رساں ادارے شنہوا کے مطابق حادثے کے بعد تقریباً 200 امدادی کارکنوں کو اس مقام کی جانب بھیجا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

سی سی ٹی وی کے براڈکاسٹر کا کہنا ہے کہ یہ حادثہ اس جگہ پر پیش آیا ہے جہاں دریا کے پانی کے دو بہاؤ ایک جگہ ملتے ہیں اور اس سے شدید بجلی کا جھٹکا پیدا ہوتا ہے۔

ذرائع ابلاغ کی خبروں کے مطابق پانی میں الٹنے والے زیادہ تر افراد نے جان بچانے والی جیکٹیں نہیں پہن رکھی تھیں۔

ان خبروں کے مطابق اس مشق کا انعقاد پولیس کو بتائے بغیر ہی کیا گیا تھا جس کے وجہ سے دو منتظمین کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ ڈریگن بوٹ ریسنگ ایشیا میں کافی مقبول ہے اور چین میں تو ڈریگن بوٹ فیسٹیول روایتی چھٹیوں کے طور پر منایا جاتا ہے جس دوران ملک بھر میں ان کے مقابلوں کا انعقاد کیا جاتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں