دہلی کے مکان سے ایک ہی خاندان کے 11 افراد کی لاشیں برآمد

انڈیا کے دارالحکومت میں پولیس کا کہنا ہے کہ دہلی کے ایک دکان میں ایک ہی خاندان کے گیارہ افراد کی لاشیں ملی ہیں جن میں سے 10 افراد کی لاشیں چھت سے لٹکی ہوئی تھیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ان گیارہ افراد میں دو بچے بھی شامل ہیں۔ پولیس نے مزید بتایا کہ صرف ایک لاش زمین پر پڑی تھی جو 77 سالہ عورت کی تھی۔

زیادہ تر لاشوں کی آنکھوں پر پٹیاں بندھی ہوئی تھی، منہ پر کپڑا بندھا تھا اور ان کے ہاتھ پیچھے بندھے ہوئے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دکان سے ملنے والے ہاتھ سے لکھے ہوئے نوٹس سے لگتا ہے کہ یہ کوئی جادوئی پریکٹس ہو سکتی ہے۔ تاہم ان کا کہنا ہے کہ قتل کو رد نہیں جا رہا۔

دہلی کے براری علاقے میں واقع اس دکان میں صرف ایک پالتو کتا ہی زندہ پایا گیا ہے۔ لاشوں کا پوسٹ مارٹم شروع کر دیا گیا ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ علاقے میں خوف و ہراس پایا جا رہا ہے۔

Image caption ہمسائے گرچرن سنگھ نے اتوار کی صبح یہ لاشیں دیکھیں جب وہ دودھ خریدنے جا رہے تھے

اطلاعات کے مطابق بھاٹیا خاندان جو راجستھان سے تعلق رکھتا تھا اور گذشتہ 20 سالوں سے دہلی میں مقیم تھا۔ اس تین منزلہ عمارت کے گراؤنڈ فلور پر ان کی دو دکانیں تھیں۔

ہمسائے گرچرن سنگھ نے اتوار کی صبح یہ لاشیں دیکھیں جب وہ دودھ خریدنے جا رہے تھے۔

’میں جب دکان میں داخل ہوا تو تمام دروازے کھءے تھے اور دس لاشیں چھت سے لٹکی ہوئی تھیں اور ایک لاش فرش پر پڑی تھی۔‘

متعلقہ عنوانات