اسرائیل کی دھمکی: ایران نے آبنائے باب المندب بند کی تو فوج تعینات کریں گے

oil tanker تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

اسرائیل نے ایران کو خبردار کیا ہے کہ بحیرہ احمر کی آبنائے باب المندب کو بند کرنے پر اُسے منہ توڑ عسکری جواب دیا جائے گا جبکہ ایران خلیج عرب میں بڑے پیمانے پر عسکری مشقوں کی تیاری کر رہا ہے۔

بدھ کو اسرائیل کے وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے کہا کہ ایران نے اگر بحیرہ احمر کو خلیج عدن سے ملانے والی آبنائے باب المندب کو بند کیا تو اسرائیل اپنی فوج تعینات کر دے گا۔

’سعودی عرب ایران کے خلاف قرارداد کی حمایت کرے گا‘

ایران پر پابندیوں کے اثرات: چارٹس میں

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے سعودی عرب نے اس آبنائے سے گزرنے والی دو آئل ٹینکروں پر حوثی باغیوں کے مبینہ حملوں کے بعد سعودی عرب نے اس راستے سے یورپ کو تیل کی رسد روک دی تھی۔

حوثی باغیوں نے گذشتہ ہفتے آبنائے کو بند کرنے کی دھمکی دیتے ہوئے کہا تھا کہ وہ سعودی عرب کی بندرگاہوں کو بھی نشانہ بنا سکتے ہیں۔

یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف کے سعودی کمان میں عسکری آپریشن گذشتہ تین سال سے جاری ہے۔ اور یمن آبنائے باب المندب کی جنوبی سمت میں ہے۔

ایران کی دھمکی کے جواب میں اسرائیل کے وزیراعظم نے کہا کہ 'اگر ایران نے آبنائے باب المندب کو بند کرنے کی کوشش کی تو میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ بین الاقوامی اتحادی بھی اس کی مخالفت کریں گے اور اسے محفوظ بھی بنائیں گے۔ اس اتحاد میں اسرائیلی افواج بھی شامل ہوں گی۔‘

اس سے پہلے اسرائیل کے وزیر دفاع نے کہا کہ 'حال ہی میں بحیرہ احمر میں اسرائیلی جہازوں کو لاحق خطرات کے بارے میں سنا ہے۔' تاہم انھوں نے اس حوالے سے مزید تفصیلات نہیں دیں۔

باب المندب 29 کلو میٹر چوڑی آبنائے ہے اور یہاں سے ہزاروں تیل بردار جہاز گزرتے ہیں۔ امریکہ کے توانائی کے ادارے کے مطابق 2016 میں اس راستے سے یومیہ چار کروڑ اسی لاکھ بیرل تیل گزرا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption باب المندب 29 کلو میٹر چوڑی آبنائے ہے اور یہاں سے ہزاروں تیل بردار جہاز گزرتے ہیں

ایران کی عسکری مشقیں

دوسری جانب امریکہ کے ساتھ تعلقات انتہائی کشیدہ ہونے کے بعد ایران بڑے پیمانے پر عسکری مشقوں کی تیاری کر رہا ہے۔

امریکی سینٹرل کمانڈ نے تصدیق کی ہے کہ آبنائے ہرمز میں ایران کی جانب سے غیر معمولی سرگرمیاں دیکھنے میں آئی ہیں۔

امریکی سینٹرل کمان کے ترجمان نے کہا کہ 'ہم خلیج عرب، آبنائے ہرمز اور خلیج عمان میں ایرانی بحریہ کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں سے آگاہ ہیں۔ ہم صورتحال کا بغور معائنہ کر رہے ہیں اور اپنے اتحادیوں کے ساتھ اس بات کی یقین دہانی کروائیں گے کہ بین الاقوامی پانی میں آزادنہ نقل و حمل اور تجارت جاری رہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption امریکی سینٹرل کمانڈ نے تصدیق کی ہے کہ آبنائے ہرمز میں ایران کی جانب سے غیر معمولی سرگرمیاں دیکھنے میں آئی ہیں

ایران کے اعلیٰ حکام کا کہنا ہے کہ ایران کی تیل کی برآمدات رکوانے کے لیے امریکی کوششوں کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

امریکی حکام نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ ایران کے پاسدرانِ انقلاب عسکری مشقوں کی تیار کر رہے ہیں جس میں سو سے زیادہ بحری جہاز اور سینکڑوں زمینی افواج حصہ لے رہی ہیں۔ اُن کا کہنا ہے کہ یہ مشتقیں اگلے دو دن میں شروع ہو سکتی ہیں۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ اس وقت ایران ان عسکری مشقوں کے ذریعے امریکہ کو پیغام دینا چاہتا ہے۔ امریکہ نے ایران کے خلاف جارحانہ رویہ اپناتے ہوئے پابندیوں کے ذریعے اقتصادی اور معاشی دباؤ بڑھا دیا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ایران مخالف پالیسوں سے ایرانی معشیت کو بری طرح نقصان پہنچا ہے اور ایرانی کرنسی کی قدر بہت کم ہو گئی ہے۔ ایرانی معیشت کی بری حالت کی وجہ سے ایران میں مظاہرے ہو رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں