افغان انتخابات: پولنگ کے دن پرتشدد واقعات میں کم از کم 28 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Anadolu Agency

کابل میں پولیس کا کہنا ہے کہ ایک پولنگ سٹیشن پر ہونے والے خودکش حملے میں کم از کم دس افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

افغان حکام کے مطابق الیکشن والے دن ملک میں پرتشدد واقعات میں اب تک 28 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

’جب تک زندہ ہوں، طالبان اور پاکستان کا دشمن رہوں گا‘

ملک میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات میں سنیچر کو کئی مقامات پر پولنگ ختم ہو چکی ہے جبکہ بعض مقامات پر لمبی قطاروں کی وجہ سے ٹائم بڑھا دیا گیا ہے۔

پولنگ کے دن سے قبل کئی پرتشدد واقعات پیش آچکے ہیں جن میں 10 امیدوار بھی ہلاک ہوگئے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption افغان میڈیا کے مطابق جنرل رازق پاکستان اور افغانستان کے درمیان متنازع ڈیورنڈ لائن پر باڑ لگانے کے بھی سخت مخالف تھے

طالبان اور خود کو دولت اسلامیہ کہنے والی شدت پسند تنظیم کی جانب سے الیکشن والے دن پرتشدد واقعات کی دھمکیاں موصول ہوتی رہی ہیں اور ملک بھر میں پچاس ہزار فوجی تعینات کیے گئے تھے۔

قندھار میں جمعرات کو پولیس کے سربراہ جنرل عبدالرازق کو ایک حملے میں ہلاک کر دیا گیا تھا۔

حکام کا کہنا ہے کہ ملک کے نوے فیصد پولنگ سینٹرز میں ووٹ ڈالے جا رہے ہیں۔

صدر کے سکیورٹی کے مشیر نے بی بی سی کو بتایا کہ ایسے تین سو پولنگ سینٹر جہاں انتظامی یا تکنیکی وجوہات کی وجہ سے پولنگ نہیں ہہو سکی وہاں اتوار کو ووٹنگ ہوگی۔

اسی بارے میں