نشے میں حاملہ خاتون کا آپریشن کرنے پر ڈاکٹر گرفتار

INDIA تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

مغربی انڈیا کی ریاست گجرات کی پولیس کے مطابق ایک ڈاکٹر کو نشے کی حالت میں حاملہ خاتون کے آپریشن کرنے پر حراست میں لے لیا گیا ہے۔

بچے کی موت آپریشن کے کچھ دیر بعد ہوئی جبکہ خاتون بھی اس کے بعد مر گئی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ سانس کے ذریعے شراب نوشی کے ٹیسٹ سے ثابت ہوا ہے کہ ڈاکٹر نشے میں تھا۔

ڈاکٹر پی جے لاکھانی ایک سینیئر ڈاکٹر ہیں اور تجربہ کار بھی ہیں۔ وہ سرکاری ہسپتال سوناوالہ میں گذشتہ 15 برس سے کام کر رہے ہیں۔

مریضہ کامنی چاچی کو منگل کو درد زرہ کے بعد ہسپتال لایا گیا تھا۔

مزید پڑھیے

چین میں حاملہ خاتون کی خودکشی، طبّی حقوق پر بحث

لاڑکانہ میں گلوکارہ کی ہلاکت، ملزم کا جسمانی ریمانڈ

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ منتظر خاندان نے بتایا کہ بچے کی موت پہلے ہوئی جبکہ اس کی ماں کا بہت زیادہ خون بہہ گیا تھا۔

خاندان والوں نے مریضہ کو دوسرے ہسپتال لے جانے کا فیصلہ کیا لیکن ابھی وہ راستے میں ہی تھے کہ متاثرہ ماں بھی چل بسیں۔

پولیس نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ ڈاکٹر لاکھانی نے پولیس کو بلایا اور کہا کہ انھیں خطرہ ہے کہ متاثرہ خاتون کا خاندان ان پر حملہ کرے گا جب انھیں موت کا پتہ چلے گا۔

ایچ آر افسر گوسوامی کا کہنا ہے کہ 'ہمیں پتہ چلا کہ وہ نشے میں ہے، ہم وہاں پہنچے اور ہم نے اسے گرفتار کر لیا۔'

ہسپتال نے اس واقعے کے حوالے سے ایک کمیٹی بنائی ہے جو اس موت کی وجہ پر مزید تحقیقات کرے گی۔

اسی بارے میں