انڈیا میں پرانے نوٹوں پر پابندی کے بعد جاری نئے نوٹ نیپال نے بند کیوں کر دیے؟

انڈین نوٹ تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption انڈین نوٹ

انڈیا میں پرانے نوٹوں پر پابندی کے بعد جاری ہونے والے نئے دو ہزار، پانچ سو اور ود سو کے نوٹ اب نیپال میں استعمال نہیں کیے جا سکیں گے۔ انڈیا میں 2016میں نوٹوں پرپابندی کے عمل کے بعد دو ہزار، پانچ سو، دو سو اور پچاس کے نئے نوٹ جاری کیے تھے۔

مودی حکومت کی جناب سے سنہ 2016میں پانچ سو اور ایک ہزار کے پرانے نوٹ بند کیے جانے کے بعد دو ہزار، پانچ سو، دو سو ، سو اور پچاس روپیے کے نئے نوٹ جاری کیے گئے تھے۔ اس عمل کے دو برس بعد نیپال نے ان میں سے دو ہزارن پانچ سو اور دو سو کے نوٹوں پر پابندی لگا دی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

انڈيا: کرنسی نوٹ پر پابندی کے بعد بینکوں میں افراتفری

’منہ دکھائی میں پرانے نوٹ دینے پڑیں گے‘

نیپال کی دارالحکومت میں موجود بی بی سی ہندی کے ریڈیو ایڈیٹر راجیش جوشی نے بتایا کہ ’سرکاری ترجمان گوکل باسکوٹا کا کہنا ہے کہ دو ہزار، پانچ سو اور دو سو روپے کے انڈین نوٹوں کو رکھنا، ان کے بدلے کوئی اشیاء خریدنا یا انہیں نیپال کے اندر لانا غیر قانونی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

انہوں نے بتایا کہ انڈیا میں پرانے نوٹوں پر پابندی کے عمل کے بعد سے ہی یہ مسئلہ موضوع بحث ہے۔

دو برس بعد کیوں اٹھا یہ سوال

انڈین کرنسی نیپال میں آسانی سے چلتی تھی۔ نیپال کے متعدد مقامی افراد کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اب بھی انڈیا کے پرانے ایک ہزار اور پانچ سو روپے کے کئی نوٹ ہیں، جنہیں واپس نہیں لیا گیا ہے۔

نیپال کے وفاقی بینک نے ماضی میں یہ بھی کہا تھا کہ ان کے پاس انڈیا کے آٹھ کروڑ مالیت کے پرانے نوٹ اب بھی ہیں۔ پرانی انڈین کرنسی کے مسئلے پر نیپال انڈیا سے ناراض بھی رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

'کرنسی نوٹوں پر پابندی کی پالیسی ناکام رہی'

کرنسی نوٹ کی تبدیلی کے لیے بینکوں میں بھیڑ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

نیپال کے فارین ایکسچینج مینیجمینٹ محکمے کے ایکزیکیوٹو ڈائریکٹڑ بھیشمراج دنگانا نے ستمبر 2018 میں کہا تھا کہ بھارت اپنے پرانے نوٹوں کو آخر کیوں نہیں بدلتا۔

راجیش جوشی نے بتایا کہ یہ موضوع تب بھی اٹھایا گیا جب انڈین وزیر اعظم نریندر مودی جنکپوردھام کی زیارت کرنے گئے تھے۔ تب نیپال کے وزیر اعظم کے پی شرما اولی نے بھی ان سے اس مسئلے کا ذکر کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

انڈیا کو کرنسی کی قلت کا سامنا، ہزاروں اے ٹی ایم بند

کس کس کو خبر تھی؟

لیکن اس کا کوئی اثر نہیں ہوا اور اس وجہ سے نیپال بھارت سے ناراض رہا۔ شاید اسی وجہ سے نیپال کی حکومت نے انڈیا کے نئے نوٹوں کو اپنے ہاں غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔

تاہم نیپال کی حکومت نے دو ہزار، پانچ سو اور دو سو روپےکے نئے نوٹوں کے علاوہ کسی اور نوٹ کے بارے میں نہیں بتایا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

راجیش جوشی یہ بھی کہتے ہیں کہ اس مسئلے کے باوجود دونوں ممالک کے تعلقات ماثر ہونے کے بارے میں کچھ نہیں کہا جا سکتا ہے۔ ان کا خیال ہے کہ جب یہ فیصلہ لیا گیا ہوگا تب انڈین حکومت یا نیپال میں موجود انڈین سفیر کو اندازہ رہا ہوگا کہ اس طرح کا اعلان کیا جانے والا ہے۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ نوٹوں پر ناراضی کے باوجود دونوں ممالک کے درمیان دیگر متعدد موضوعات پر بات چیت بھی چلتی رہی ہے۔

اسی بارے میں