!بہت جنگ ہوگئی، اب بس
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

کابل میں سوا دو لاکھ افراد کے لیے صرف ایک ایمبولینس

کابل میں آئے روز دھماکوں اور ہلاکتوں کے پیش نظر عوام ہر کسی کو شک کی نگاہ سے دیکھتی ہے اور ایسے حالات میں ایمولینس سروسز کو بھی سکیورٹی اہلکار تلاشی کے لیے روک لیتے ہیں۔

کابل جیسے شہر میں جہاں ایمرجنسی سہولیات کا پہلے ہی فقدان ہے، ایسے اقدامات نہ صرف ایمبولینس سروسز کے لیے دشواریاں پیدا کرتی ہیں، بلکہ متاثرین کو بھی ایک اذیت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔