سری لنکا میں ہونے والے حملوں کی تصویری جھلکیاں

سری لنکا

،تصویر کا ذریعہReuters

سری لنکا میں اتوار کو مسیحی برادری کے مذہبی تہوار ایسٹر کے موقع پر ہونے والے متعدد بم دھماکوں کے نتیجے میں 290 افراد ہلاک ہو گئے جنھیں ملک کے تین شہروں میں گرجا گھروں اور ہوٹلوں میں نشانہ بنایا گیا۔

،تصویر کا ذریعہReuters

یہ حملے ایسے موقع پر ہوئے جب گذشتہ دس سال سے ملک میں خانہ جنگی کے اختتام کے بعد سے امن کے قیام کی کوششیں ہو رہی تھیں۔

واقعے کے بعد سے سری لنکا بھر میں گرجا گھروں پر فوجیوں کو تعینات کر دیا گیا ہے اور لوگ اپنے پیاروں کو تلاش کرنے میں مردہ خانوں کے چکر لگا رہے ہیں۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

اس تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شہر بّٹی کالؤا میں مردہ خانے کے عملے کے دو افراد کام سے تھکن کے بعد وقفہ لے رہے ہیں۔ اس شہر کے زائون چرچ میں حملہ ہوا تھا۔

،تصویر کا ذریعہAFP

وہ جنھوں نے اپنے پیاروں کی شناخت کر لی تھی وہ ان کے لیے نہایت مشکل مرحلہ تھا۔

،تصویر کا ذریعہAFP

ملک کے دارالحکومت کولمبو کے علاقے کوچ چکیادے میں سینٹ انتھونی چرچ پر بھی حملہ ہوا تھا جس کے بعد اس کے باہر سکیورٹی اہلکار تعینات کر دیے گئے۔

،تصویر کا ذریعہReuters

ملک کی اکثریت آبادی بدھ مت کے پیروکاروں کی ہے۔ ان میں سے چند راہبوں نے دھماکوں کے بعد کولمبو کے چرچ کا دورہ کیا۔

،تصویر کا ذریعہReuters

گرجا گھروں کے علاوں کولمبو کے ہوٹلوں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

اس تصویر میں کنگزبری ہوٹل کو ہونے والے نقصان کو واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے۔ .

،تصویر کا ذریعہEPA

نگیمبو شہر کے سینٹ سباشین چرچ میں پادری واقعے کے بعد سکتے ہیں میں جبکہ سکیورٹی اہلکار وہاں کا معائنہ کر رہے ہیں۔

،تصویر کا ذریعہReuters

اسی چرچ میں پولیس سینٹ جیمز کے مجسمے کو دیکھ رہی ہے جس کے ارد گرد دیوار پر خون کے نشان ہیں۔

،تصویر کا ذریعہEPA

کولمبو کے سینٹ انتھونی چرچ کے باہر کے مناظر۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

بم دھماکے کے بعد ملک کے وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے نے گرجا گھر کے دورہ کیا۔

،تصویر کا ذریعہEPA

تمام تصاویر کے جملہ حقوق محفوظ ہیں۔