چاند پر مشن کے لیے انڈیا کے چندرایان-2 کی نقاب کشائی

تصویر کے کاپی رائٹ PRESS INFORMATION BUREAU, INDIA

انڈیا کے خلائی ادارے، انڈین سپیس اینڈ ریسرچ آرگنائزیشن (اِسرو) نے اگلے ماہ چاند پر بھیجے جانے والی خلائی گاڑی کی رونمائی کر دی ہے جو ستمبر میں اپنی منزل پر پہنچے گی۔

اگر یہ مشن کامیاب رہا تو چاند کی سطح پر سافٹ لینڈِنگ یعنی سالم اترنے والا انڈیا دنیا کا چوتھا ملک ہوگا۔ اس سے پہلے امریکا، سویت یونین اور چین یہ اعزاز حاصل کر چکے ہیں۔

چندرایان-2 انڈیا چاند پر جانے والا انڈیا کا دوسرا مشن ہوگا۔

اس سے قبل 2008 میں چندرایان-1 صرف چاند کے مدار میں گیا تھا۔ یعنی اس نے چاند کی سطح کو نہیں چھوا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ PRESS INFORMATION BUREAU, INDIA

یہ مشن چاند کی سطح پر پہنچ کر وہاں پانی، معدنیات اور چٹانوں کی ساخت کے بارے میں معلومات اکھٹی کرے گا۔

یہ نئی خلائی گاڑی ’لینڈر‘، ’اوربیٹر‘ اور ’روور‘ پر مشتمل ہوگی۔

اگر سب کچھ منصوبے کے مطابق انجام پاتا ہے تو لینڈر چاند کے جنوبی قطب پر ستمبر میں اترے گا اور یہ چاند کے اس حصے پر اترنے والی پہلی خلائی گاڑی ہوگی۔

اِسرو کے سربراہ کے سِیوان نے ٹائمز آف انڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ روور چاند کی سطح پر چودہ روز تک رہے گا۔ انھوں نے کہا کہ 'روور چاند کی سطح کا تجزیہ کر کے معلومات اور تصاویر زمین پر بھیجے گا۔'

اسی بارے میں