ڈھاکہ:کپڑوں کی فیکٹری میں آتشزدگی،نو ہلاک

Image caption اپریل میں ایک عمارت منہدم ہونے سے گیارہ سو افراد ہلاک ہو گئے تھے

بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ کے نزدیک واقع کپڑا تیار کرنے والی ایک فیکٹری میں آتشزدگی سے کم از کم نو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق منگل کو غازی پور میں واقع اس فیکٹری میں آتشزدگی سے کم از کم پچاس افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

بنگلہ دیش: متاثرین کا معاوضہ طے نہیں ہو سکا

ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ابھی تک آگ لگنے کی وجوہات کا اندازہ نہیں ہو سکا ہے تاہم بغص اطلاعات کے مطابق آسود کمپوزٹ ملز میں آگ کپڑا تیار کرنے والے حصے میں لگی۔

فیکٹری سے زیادہ تر مزدور جا چکے تھے لیکن رات کے وقت کام کر نے والے مزدور وہاں خاصی تعداد میں موجود تھے۔

مقامی اخبار ڈیلی سٹار نے پولیس افسر عامر حسین کے حوالے سے بتایا ہے کہ متاثرہ عمارت سے نو لاشیں نکالی جا چکی ہیں۔

Image caption بنگلہ دیش میں ملبوسات تیار کرنے والی فیکٹریوں میں حفاظتی اقدامات ناقص ہونے کی وجہ سے حادثات پیش آتے رہتے ہیں

بنگلہ دیش میں حفاظتی معیار سے غفلت کے نتیجے میں عمارتوں کے منہدم ہونے یا ان میں آتشزدگی کے واقعات اکثر پیش آتے رہتے ہیں۔ رواں سال اپریل میں ایک عمارت کے گرنے سے گیارہ سو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ اس عمارت میں ملبوسات تیار کرنے والی دو فیکٹریاں موجود تھیں۔

اس سے پہلے گزشتہ نومبر میں ایک اور فیکٹری میں آتشزدگی کے واقعے میں ایک سو بارہ کارکن مارے گئے تھے۔

بنگلہ دیش کی برآمدت میں ملبوسات کا حصہ ایک تہائی ہے اور یہاں فیکٹریوں میں حادثات کے بعد حفاظتی معیار کو بہتر بنانے کے حوالے سے احتجاجی مظاہرے بھی ہو چکے ہیں۔

جولائی میں ستر کے قریب بین الاقوامی کمپنیوں نے اتفاق کیا تھا کہ ایسی فیکٹریوں کا معائنہ کیا جائے گا جہاں سے وہ اپنی مصنوعات تیار کرائیں گی۔

اسی بارے میں