چین: بیس برس سے گٹر میں رہنے پر مجبور

Image caption چین میں کہا جارہا ہے کہ غریبوں اور مزدوروں کے لیے رہائش ایک سنگین مسئلہ بنتا جارہا ہے

چین کی کوان یوجھی غربت کی وجہ سے گزشتہ بیس برس سے ایک چھوٹے سے گٹر میں رہنے پر مجبور ہیں۔

چین کے سرکاری اخبار چائنا ڈیلی میں شائع ہونے والی اس خبر کے مطابق کوان یوجھی گزشتہ بیس برس سے زمین کے اندر رہ رہی ہیں اور اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ بے حد غریب ہیں اور ان کے پاس اپنے آبائی وطن جانے کے لیے پیسے تک نہیں ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شانگزی کے مشرقی علاقے میں موجودہ اپنا گھر منہدم ہوجانے کے بعد کوان یوجھی بیجنگ میں ایک سڑک کنارے بنے گٹر کے اندر رہنے لگیں۔

کوان کو جب نہانا دھونا ہوتا ہے تو قریب موجود پارک میں بنے ایک غسل خانے میں چلی جاتی ہیں۔ ان کے خاوند بھی ان کے ساتھ اس گٹر میں رہتے ہیں اور دونوں میں اکثر لڑائی ہوتی ہے۔

کوان جس گٹر میں رہتی ہیں وہاں سے گرم پانی کا پائپ بھی گزرتا ہے۔ یہ گرم پانی کا پائپ ان کے لیے راحت بھی اور آفت بھی۔

Image caption اپنا گھر منہدم ہوجانے کے بعد کوان یوجھی بیجنگ میں ایک سڑک کنارے بنے گٹر کے اندر رہنے لگیں

سردی میں ان کے رہنے کی جگہ گرم رہتی ہے لیکن گرمی کا موسم آتے ہیں گرم پانی کا پائپ کوان کے لیے تکلیف کا باعث بن جاتا ہے۔

گرمی کے موسم میں یہ گٹر اتنا تپنے لگتا ہے کہ کوان کو باہر آکر کھڑے ہونا پڑتا ہے۔

برسات میں کوان کو آسمان کو نیچے سونا پڑتا ہے کیونکہ بارش میں یہ گٹر پانی میں پوری طرح ڈوب جاتا ہے۔

Image caption کوان جس گٹر میں رہتی ہیں وہاں سے گرم پانی کا پائپ بھی گزرتا ہے

کوان روزی روٹی کے لیے خالی ڈبے اور بوتلیں اکٹھا کرتی ہے۔ ان کی خواہش ہے کہ وہ ایک گھر بنائیں مگر اس کے لیے ان کے پاس پیسے نہیں ہے۔

چین میں کہا جارہا ہے کہ غریبوں اور مزدوروں کے لیے رہائش ایک سنگین مسئلہ بنتا جارہا ہے۔

چین یوتھ یونیورسٹی میں سیاسیات کے پروفیسر چین تاؤ نے چائنا ڈیلی اخبار کو بتایا ’چین کا آئین کہتا ہے کہ اپنے بزرگ والدین کی اقتصادی مدد کرنا ان کے خاندان کی ذمہ داری ہے۔‘

Image caption اس خبر کے بعد انتظامیہ نے گٹروں میں بنے ان عارضی گھروں کو سیمنٹ سے بند کردیا گیا ہے

بیجنگ کی ’کریم ویب سائٹ‘ میں ایک رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی ہے اخباروں میں کوان کی کہانی شائع ہونے کے بعد انتظامیہ کوان کا گھر بنانے کا انتظام کررہی ہے۔

اس خبر کے منظر عام پر آنے کے بعد کوان اور ان کے جیسے بزرگوں کے گٹروں میں بنے ان عارضی گھروں کو سیمنٹ سے بند کردیا گیا ہے۔

اسی بارے میں