بھارت: پاکستان کے علاوہ 180 ممالک کے شہریوں کے لیے آمد پر ویزا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حکومت ایک ویب سائٹ تیار کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے جس کے ذریعے سیاح ویزے کے لیے درخواست دے سکیں گے

بھارتی حکومت نے سیاحت اور تجارت کو فروغ دینے کے لیے سیاحوں کو ملک میں آمد پر ویزا دینے کی سکیم میں شامل ممالک کی تعداد 180 کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس سکیم سے آٹھ ممالک کے شہری فائدہ نہیں اٹھا سکیں گے جن میں پاکستان اور افغانستان کے شہری شامل ہیں۔

حکومت اس سکیم پر اکتوبر 2014 سے عمل درآمد کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے۔

فی الحال بھارت ملک آمد پر بشمول فن لینڈ، جاپان اور سنگاپور صرف 11 ممالک کے شہریوں کو ویزا دیتا ہے۔

ملک کے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی راجیو شکلا نے کہا کہ ’ہم نے 180 ممالک سے آنے والے سیاحوں کو آمد پر ویزا دینے کا فیصلہ کیا ہے۔اس سلسلے میں متعلقہ محکموں کو ضروری اقدامات کرنے کے لیے پانچ سے چھ مہینے لگیں گے۔ ہمیں امید ہے کہ ہم اس پر آنے والے سیاحت کے سیزن میں اکتوبر سے عمل درآمد کر لیں گے۔ ‘

انھوں نے اس کی کوئی وضاحت نہیں دی کہ پاکستان، افغانستان، سوڈان، ایران، عراق، نائجیریا، سری لنکا اور صومالیہ کے شہریوں کو اس سکیم میں کیوں شامل نہیں کیا گیا۔

راجیو شکلا نے کہا کہ بھارت کے 26 ہوائی اڈوں پر ملک میں آمد پر الیکٹرانک نظام کے ذریعے ویزا لینے کی سہولت موجود ہو گی اور اس ویزے کی مدت 30 دن ہوگی جو سیاح کے آمد کی تاریخ سے شمار ہوں گے۔

راجیو شکلا نے اس فیصلے کو ’تاریخی‘ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے ’سیاحت کو بہت فروغ‘ ملے گا۔

حکومت ایک ویب سائٹ تیار کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے جس کے ذریعے سیاح ویزے کے لیے درخواست دے سکیں گے اور ویزے کی فیس جمع کرا سکیں گے۔ درخواست کے تین دن کے بعد کسی بھی ہوائی اڈے پر آمد پر ویزا مہیا کر دیا جائے گا۔

اسی بارے میں