شاہی عجائب گھر کی نگرانی کے لیے بلیوں کی بھرتی

Image caption بیجنگ کی سڑکوں پر آوارہ بلیوں کا نظر آنا عام سی بات ہے

چین کے درالحکومت بینجگ میں حکام نے شہرِ ممنوعہ یا شاہی محلات پر مشتمل عجائب کو چوہوں سے محفوظ رکھنے کے لیے 200 کے قریب بلیوں کو تربیت دی ہے۔

چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی زنہوا کے مطابق عجائب گھر کی انتظامیہ نے گذشتہ پانچ سال کے دوران 180 بلیوں کو خصی کر کے عجائب گھر میں چھوڑا۔

عجائب گھر کے اہلکار مؤ کیوکنگ کے مطابق بلیاں نہ صرف عجائب گھر کو چوہوں اور حشرات سے بچانے میں مدد گار ثابت ہو رہی ہیں بلکہ یہ عجائب گھر میں موجود پالتو پرندوں کو نقصان نہیں پہنچاتی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ بلیوں کے عجائب گھر میں موجود ثقافتی نوادارت کو کسی قسم کا نقصان پہنچانے کے آثار تاحال نہیں ملے ہیں۔

عجائب گھر کا عملہ ان بلیوں کو خوراک، ویکسین، وٹامنز دیتا ہے اور یہ عجائب گھر کے سرد موسم میں چوہوں پر نظر رکھتی ہیں۔

چین کے اخبار پیپلز ڈیلی کے مطابق بلیوں کو اکثر اوقات عجائب گھر کے کمروں میں جانے کی اجازت دی جاتی ہے اور ان مراعات کے بعد میں وہ محافظ کی ڈیوٹی کرتی ہیں۔

عجائب گھر کے اہلکار مؤ کیوکنگ کے مطابق ان بلیوں سے عجائب گھر آنے والے سیاحوں کو کسی حد تک خطرہ ہو سکتا ہے اور اس کے علاوہ بلیوں کا فضلہ سیاحوں کے لیے ناخوشگور ثابت ہو سکتا ہے۔

چین کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق بیجنگ میں اس وقت آوارہ مادہ بلیوں کی تعداد ی تعداد دو لاکھ کے قریب ہیں اور یہ سال میں اوسط تین سے چار بچوں کو جنم دیتی ہیں ہر بلی اپنی عمر میں شہر میں 100 آوارہ بلیوں کا اضافہ کرتی ہے۔

اسی بارے میں