رمضان یا رمدان!

سرور چشتی تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption بھارت برصغیر میں تو رمضان ہی کہا جاتا رہا ہے

پیر سے بھارت میں مسلمانوں نے روزے رکھنے شروع کر دیے ہیں لیکن سوشل میڈیا میں ایک بار پھر اس بات پر بحث چھڑ گئی ہے کہ اس مقدس مہینے کو رمضان کہا جائے یا رمدان۔

بھارت میں پہلے تو اسے رمضان کہا جاتا تھا، لیکن گذشتہ کچھ سال سے کچھ لوگ اسے رمدان کہنے لگے ہیں آخر اس کی وجہ کیا ہے؟

انڈین کونسل فار ورلڈ افيئرز میں سینیئر ریسرچ فیلو ڈاکٹرفضل الرحمان کہتے ہیں کہ یہ صرف تلفظ کا فرق ہے۔

ان کے مطابق، ’عربی زبان میں ’ض‘ کا تلفظ انگریزی کے زیڈ کے بجائے کے بجائے ڈی ایچ کے مشترک ہوتا ہے۔ اس لیے عربی میں اسے رمضان (رمدان ) کہتے ہیں جبکہ اردو میں عام طور پر رمضان کہتے ہیں‘۔

سوال یہ ہے کہ آخر گزشتہ کچھ سالوں سے ہی یہ فرق کیوں نظر رہا ہے۔

ڈاکٹر رحمان کہتے ہیں کہ یہ بھارت اور سعودی عرب کے درمیان بڑھتے ثقافتی تعلقات کا نتیجہ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ بھارت اور سعودی عرب کے درمیان بڑھتے ثقافتی تعلقات کا نتیجہ ہے

ان کے مطابق بھارت سے اب زیادہ سے زیادہ لوگ سعودی عرب جا رہے ہیں اور وہاں سے واپس آنے کے بعد وہاں کی بول چال، پوشاکوں اور وہاں کا رہن سہن بھارت میں استعمال کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

اجمیر میں خواجہ غریب نواز کی درگاہ کے گدي نشين سید سرور چشتی بھی کہتے ہیں کہ یہ صرف عربی اور اردو زبان کے کچھ حروف کے تلفظ کا فرق ہے۔

ان کے مطابق بھارت برصغیر میں تو رمضان ہی کہا جاتا رہا ہے لیکن انہوں نے بھی تسلیم کیا کہ گذشتہ چند سال میں رمضان لفظ کے استعمال میں اضافہ ہوا ہے۔

سرور چشتی کہتے ہیں، ’بھارت اور سعودی عرب کے بڑھتے تعلقات اور بھارت میں مدارس کے ذریعہ سعودی عرب کے بڑھتے اثرات کی وجہ سے ایسا ہو رہا ہے‘۔

یہ بحث نہ صرف بھارت میں بلکہ پاکستان میں بھی چھڑی ہوئی ہے۔

پاکستان کے مشہور کارٹونسٹ صابر نذر نے ایک کارٹون بنایا ہے، جس میں عربی لباس میں ایک آدمی طوطے کو سکھا رہا ہے کہ یہ رمضان ہے، رمدان نہیں۔

اسی بارے میں