بی جے پی کی جاسوسی پر امریکہ سے احتجاج

تصویر کے کاپی رائٹ pti
Image caption دہلی میں امریکہ کی سفیر نینسی پاول کی جگہ اس وقت کیتھلین سٹیفن کار گزار سفیر کی ذمے داریاں ادا کر رہی ہیں

بھارت نے امریکہ کے قومی سلامتی کے ادارے این ایس اے کے ذریعے حکمراں جماعت بی جے پی کی جاسوسی کیے جانے کے خلاف امریکہ سے احتجاج کیا ہے اور اس سے کہا ہے کہ وہ مستقبل میں ملک کی سیاسی جماعتوں کی جاسوسی کرنے سے باز رہے۔

امریکی خفیہ اداروں کے ذریعے بی جے پی کی جاسوسی کرنے کی خبر کے انکشاف پر سخت ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے حکومت نے دہلی میں مامور امریکہ کے ایک اعلیٰ سفارت کار کو طلب کیا اور ان سے جاسوسی کے معاملے پر اپنی ناخوشی ظاہر کی۔

بھارت نے کہا کہ کسی فرد یا کسی بھارتی تنظیم یا ادارے کی جاسوسی ’قطعی نا قابل قبول‘ہے۔ حکومت نے امریکہ سے یہ یقین دہانی بھی چاہی ہے کہ امریکہ مستقبل میں اس طرح کی جاسوسی کا مرتکب نہیں ہوگا۔

سرکاری طور پر یہ نہیں بتایا گیا کہ وزارت خارجہ نے امریکہ کے کس سفارتکار کو طلب کر کے احتجاج کیا۔

دہلی میں امریکہ کی سفیر نینسی پاول نے چند ہفتے قبل سفیر کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ اس وقت سے کیتھلین سٹیفن کار گزار سفیر کی ذمے داریاں ادا کر رہی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption امریکی شہری سنوڈن نے پہلی بار عالمی سطح پر امریکہ نگرانی کے پروگرام کا پردہ فاش کیا تھا

امریکی سفارتخانے سے رابطہ کرنے پر ایک ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ ’مسلمہ اصول کے تحت امریکہ اپنے میزبان ملک سے ہونے والی سفارتی بات چیت پر کوئی تبصرہ نہیں کرتا۔‘

اس سے قبل گذشتہ برس جولائی میں جب امریکہ کی قومی سلامتی کے ادارے کے ذریعے بھارت کے بعض افراد اور اداروں کی جاسوسی کا معاملہ سامنے آیا تھا تو اس وقت حکومت نے واشنگٹن میں امریکی انتظامیہ سے یہ سوال اٹھایا تھا۔

گذشتہ پیر کو امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے ایک خفیہ دستاویز شائع کی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ امریکہ کے قومی سلامتی کے ادارے این ایس اے نے سنہ 2010 میں جن تنظیموں اور جماعتوں کی جاسوسی کے لیے امریکہ کی ایک خصوصی عدالت سے منظوری حاصل کی تھی اس میں اس وقت کی بھارت کی حزب اختلاف کی جماعت بی جے پی بھی شامل تھی۔

بی جے پی کے علاوہ اس فہرست میں لبنان کی جماعت عمل، مصر کی اخوان المسلمین اور نیشنل سالویشن فرنٹ اور پاکستان کی اس وقت کی حکمراں جماعت پیپلز پارٹی شامل تھی۔

اسی بارے میں