’امریکہ افغان شہری ہلاکتوں کی تحقیقات میں ناکام‘

Image caption اقوام متحدہ کے مطابق افغانستان میں گذشتہ سال شہری ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے

حقوق انسانی کی بین الاقوامی تنظیم ایمنسٹی انٹریشنل کے مطابق امریکہ اپنی فوج کی وجہ سے افغان عام شہریوں کی ہلاکت کے واقعات کی تحقیقات اور اس میں ملوث اہلکاروں کو سزا دینے میں ناکام رہا ہے۔

ایمنسٹی کی ایک نئی رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ افغانستان میں قابل ذکر جنگی جرائم کی تحقیقات اور اس میں ملوث افراد کو سزا نہیں دی جا سکی۔

اس رپورٹ میں امریکی افواج کی سال 2009 اور 2013 کے درمیان افغانستان میں فضائی کارروائیوں اور رات کو چھاپوں پر توجہ مرکوز رکھی گئی ہے۔

ایمنسٹی کی 84 صفحات پر مشتمل رپورٹ’ تاریکی میں چھوڑ دیا‘ رپورٹ پر نیٹو نے امریکی خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا ہے کہ وہ رپورٹ کا جائزہ لینے کے بعد اس پر اپنا ردعمل دیں گے۔

نیٹو کے ایک ترجمان کے مطابق وہ شہری ہلاکتوں کے الزامات کو بڑی سنجیدگی سے لیتے ہیں اور تمام رپورٹس کی مکمل چھان بین کی جائے گی۔

اقوام متحدہ کے مطابق افغانستان میں گذشتہ سال شہری ہلاکتوں میں 14 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ عالمی ادارے کے مطابق گذشتہ سال تین ہزار عام شہری مارے گئے جبکہ پانچ ہزار چھ سو زخمی ہوئے۔

زیادہ تر ہلاکتیں سڑک کنارے نصب بم دھماکوں، سکیورٹی افواج اور طالبان شدت پسندوں کے درمیان لڑائی کی زد میں آنے کی وجہ سے ہوئی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption افغانستان میں غیر ملکی افواج کے فضائی حملوں میں زیادہ شہری ہلاکتوں کے زیادہ واقعات پیش آئے

افغانستان میں عام شہریوں کی ہلاکت کا معاملہ نیٹو کے لیے ایک سنجیدہ مسئلہ ہے کیونکہ شہری ہلاکتوں کی وجہ سے کئی بار صدر حامد کرزئی کے تعلقات امریکہ سے کشیدہ ہوئے اور اسی وجہ سے گذشتہ سال ایک واقعے میں شہری ہلاکتوں کے بعد افغان صدر نے شہری علاقوں میں غیر ملکی فضائی مدد طلب کرنے پر پابندی عائد کر دی تھی۔

رپورٹ میں جائزہ لیا گیا کہ کس طرح امریکہ نے ایسے واقعات میں شہری ہلاکتوں تحقیقات کیسے کیں اور فوجی کارروائیوں کے دوران ہلاکتوں کے ذمہ داروں کا احتساب کرنے میں ناکام کیوں رہا۔

ایمنسٹی کے ایشیا پیسفک کے ڈائریکٹر رچرڈ بینٹ کے مطابق’افغانستان میں امریکی چڑھائی کے بعد سے ہزاروں افغان شہری مارے گئے لیکن متاثرین اور ان اہلخانہ کو تھوڑا بہت ہی انصاف مل پایا۔ امریکی فوج کا عدالتی نظام اپنے فوجیوں کو ماورائے عدالت ہلاکتوں اور تشدد کے واقعات میں سزا دینے میں تقریباً ناکام رہا۔

رپورٹ میں افغانستان کی حکومت پر بھی زور دیا گیا کہ وہ ایسا طریقۂ کار وضع کریں جس کے تحت تشدد اور دیگر مظالم میں ملوث افغان سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں سے پوچھ گچھ اور انھیں سزا دی جا سکے۔

اسی بارے میں