’ٹوئٹر کی لوکیشن غلط ہے میں پاکستان میں نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ twitter
Image caption ٹویٹ میں ذبیح اللہ مجاہد کی لوکیشن سندھ، پاکستان دیکھی جا سکتی ہے

افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ان اطلاعات کی تردید کی ہے کہ وہ پاکستان کے صوبہ سندھ میں موجود ہیں۔

جمعے کو ان کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے کی جانے والی ایک ٹویٹ میں ان کی لوکیشن یا ٹویٹ کرنے کا مقام صوبہ سندھ آیا تھا۔

ذبیح اللہ مجاہد نے اس واقعے کو ’دشمن کی سازش‘ قرار دیتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے کہ وہ یقیناً افغانستان میں ہی ہیں۔

پاکستان میں اکثر افغان طالبان کی موجودگی کا شبہ ظاہر کیا جاتا رہا ہے تاہم پاکستان انھیں پناہ دینے کے الزام سے انکار کرتا ہے۔

ٹوئٹر کے صارفین کی جانب سے طالبان کے ترجمان کی لوکیشن کی نشاندہی ہونے کے بعد ذبیح اللہ مجاہد نے ٹویٹ کی ہے کہ ’میرے ٹوئٹر اکاؤنٹ میں گڑبڑ کی گئی ہے۔ دشمن کے منصوبے کے تحت کی گئی کوششوں کے نتیجے میں وہ دکھا رہا ہے کہ میں پاکستان کے صوبہ سندھ میں موجود ہوں۔ میں اس کوشش کو جعلی اور شرمناک قرار دیتا ہوں۔‘

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ ’اب جبکہ دشمن کی جعلی کارروائی کا پول کھل گیا ہے میں پورے اعتماد سے کہہ رہا ہوں کہ میں اپنے ملک میں ہی ہوں۔‘

ترجمان کے مطابق وہ اپنا اصل مقام ظاہر نہیں کر سکتے۔