ریپ کے پانچ مجرموں کو عمر قید کی سزا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دلی کو انڈیا کا ریپ کیپیٹل کہا جاتا ہے

دہلی کی ایک عدالت نے شہر کے دھولا کنواں کے علاقے میں ہونے والے اجتماعی ریپ کیس کے تمام پانچ قصورواروں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔

گذشتہ ہفتے عدالت نے اس معاملے میں پانچوں ملزموں کو مجرم قرار دیا تھا۔

عمر قید کی سزا کے علاوہ عدالت نے پانچوں قصورواروں پر 50، 50 ہزار روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔

یہ معاملہ نومبر 2010 کا ہے جب ان پانچ افراد نے کال سینٹر میں کام کرنے والی ایک 30 سالہ خاتون کو ان کے گھر کے قریب سے صبح سویرے اغوا کیا تھا۔

اغوا کے بعد خاتون کو انھوں نے ایک پک اپ ٹرک میں ریپ کا نشانہ بنایا جب کہ ان کی ایک ساتھی خاتون حملہ آوروں کے چنگل سے نکل کر بھاگنے میں کامیاب ہو گئی تھیں۔

بھارت میں خواتین کے ساتھ تشدد کے واقعات کی شرح میں اضافہ دیکھنے میں آر ہا ہے ۔2012 میں گینگ ریپ اور قتل کے ایک واقعے کے بعد ملک میں شدید رد عمل دیکھنے میں آیا تھا اور خواتین کے احترام اور تحفظ کے بارے میں انتظامیہ نے کئی قدم اٹھائے تھے۔

ملک میں ریپ کے واقعات کے مقدمات درج کرانے کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

اس واقعے کے بعد دہلی پولس نے دہلی میں کام کرنے والے کال سینٹروں اور دیگر کمپنیوں کو عورتوں کی سکیورٹی سے متعلق احتیاطی اقدامات پر کچھ ہدایات دی تھیں۔

پولیس کو حکم تھا کہ کام کے بعد جب خاتون ملازمین کو گھر چھوڑا جائے تو ان کے ساتھ سکیورٹی گارڈ بھیجے جائیں۔

اسی بارے میں