نوجوانوں کی ہلاکت ہماری غلطی سے ہوئی: بھارتی فوج

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’ہم تسلیم کرتے ہیں کہ غلطی ہوئی ۔۔۔ معلومات تھیں کہ ایک سفید گاڑی میں دہشت گرد ہیں۔ ظاہر ہے اس واقعے میں صحیح طور پر شناخت نہیں کی گئی‘

بھارتی فوج نے اعتراف کیا ہے کہ بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں کچھ روز قبل ہلاک کیے جانے والے دو نوجوانوں کو غلطی سے گولی مار دی گئی تھی۔

بھارتی فوج کی شمالی کمانڈ کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹیننٹ جنرل ڈی ایس ہودا نے جمعہ کی رات کو سری نگر میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اس غلطی کا اعتراف کیا۔

یاد رہے کہ پیر کو سری نگر کے مضافات میں بھارتی فوجیوں نے ایک گاڑی پر فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں دو نوجوان ہلاک ہوئے تھے۔

جنرل ہودا نے کہا ’ہم تسلیم کرتے ہیں کہ غلطی ہوئی ۔۔۔ معلومات تھیں کہ ایک سفید گاڑی میں دہشت گرد ہیں۔ ظاہر ہے اس واقعے میں صحیح طور پر شناخت نہیں کی گئی۔‘

انھوں نے کہا کہ اس واقعے کی تحقیقات کرائی جائیں گی اور یہ بالکل شفاف تحقیقات ہوں گی۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق جنرل ہودا نے کہا ’میں یہ واضح کردوں کہ بڈگام کے علاقے چترگم میں جو واقعہ پیش آیا اس کی ہم پوری ذمہ داری لیتے ہیں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ غلطیاں ہوتی ہیں لیکن اہم بات یہ ہے کہ ان غلطیوں سے سبق سیکھتے ہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ اس وقاعے کے اگلے روز ہی انکوائری شروع کردی گئی تھی۔

’اب تک 15 سویلین عینی شاہدین کے بیان ریکارڈ کیے گئے ہیں۔‘

جنرل ہودا نے کہا کہ وزارت دفاع نے ہلاک ہونے والوں کے اہلِ خانہ کو دس دس لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا ہے۔

اسی بارے میں