’جادو کے شک میں برہنہ گھمایا‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اطلاعات کے مطابق جادو کے شک میں گاؤں کے چھ افراد نے مبینہ طور پر خاتون کو کئی گھنٹے تک نالے کے پانی میں کھڑا رکھا

بھارت کی ریاست مدھیہ پردیش کے بیتول ضلع میں ایک قبائلی خاتون کو جادو کے شک میں گاؤں میں مبینہ طور پر برہنہ گھمایا گیا ہے۔

بیتول ضلع کے رائسیڑا گاؤں میں لوگوں کو 45 سالہ خاتون پر جادو کرنے کا شک تھا۔

اطلاعات کے مطابق جادو کے شک میں گاؤں کے چھ افراد نے مبینہ طور پر خاتون کو کئی گھنٹے تک نالے کے پانی میں کھڑا رکھا۔

اس کے بعد انھوں نے اس عورت کو مبینہ طور پر مارا اور پھر کپڑے اتار کر اسے جوتوں کا ہار پہنایا گیا اور گاؤں میں گھمایا گیا۔

اطلاعات کے مطابق یہ معاملہ دو دن تک چلا۔

بیتول کے ایڈیشنل ایس پی گيتیش گرگ نے بتایا: ’واقعے کی رپورٹ درج کر لی گئی ہے۔ اس میں کُل چھ ملزمان ملوث ہیں جن میں سے پانچ کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔‘

متاثرہ خاتون گاؤں میں اپنی بیٹی کے ہمراہ رہتی ہیں۔ ان کا دعویٰ ہے کہ انھیں جادو نہیں آتا لیکن گاؤں کے لوگ ان پر شک کرتے ہیں اور پریشان کرتے رہتے ہیں۔

اسی بارے میں