گیتا کو قومی کتاب قرار دیا جائے

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption بھارتی وزیرِخارجہ ششما سوراج کی ایک ممتاز ہندوصیحفے کو ملک کی قومی کتاب قراردینے کی تجویز

بھارتی وزیرِخارجہ ششما سوراج کی ہندوؤں کی مقدس کتاب کو قومی کتاب قرار دینے کی تجویز پر ملک میں شدید سیاسی بحث چھڑگئی ہے۔

ششما سوراج کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نریندرا نے پہلے ہی اس صدیوں پرانی مقدس کتاب، گیتا بھگواد کو امریکی صدر اوباما کو پیش کر کے قومی کتاب کا درجہ دے دیا ہے۔

اگرچہ دائیں بازو کے سیاستدانوں نے ان کی اس تجویز کا خیرمقدم کیا ہے مگر حزبِ اختلاف کے کچھ سیاستدانوں نے اس پر شدید ردِعمل ظاہر کیا ہے۔

ناقدین کا کہنا ہے کہ بھارت جیسے کثیر العقائد جمہوری ملک میں مناسب قومی کتاب صرف ملک کا آئین ہی ہو سکتا ہے۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق کانگریس کی رہنما اور مغربی بنگال کی وزیراعلٰی ممتابنرجی نے ردِعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’ہم تمام مقدس کتابوں کااحترام کرتے ہیں، قرآن، وید، انجیل، تری پٹک، گروگرنتھ صاحب، گیتا یہ تمام ہمارا فخر ہیں۔‘

ایک اور کانگریسی لیڈر ششی تھرور نے ٹویٹ کر کے کہا ہے کہ ’ہندو مذہب میں صرف ایک مقدس کتاب نہیں ہے۔ وید، پران، اپنشد یکساں طور پر مقدس ہیں اور بھارت میں رہنے والے دوسرے مذاہب کی کتابیں بھی مقدس ہیں۔‘

دوسری جانب وشو ہندو پریشد کے رہنما اشوک سنگھل نے ششما سوراج کی تجویز پر فوری عمل درآمد کا مطالبہ کیا ہے۔

اسی بارے میں