افغانستان: کابل میں سکول کی تقریب میں خودکش حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کابل میں جمعرات کو ہونے والا یہ دوسرا بم حملہ ہے

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک سکول کی تقریب میں خودکش حملہ ہوا ہے جس میں کم سے کم ایک شخص ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔

فرانسیسی حکام کے مطابق سکول میں ہونے والے خودکش بم حملے میں متعدد افراد ہلاک ہو گئے ہیں اور پندرہ کے قریب زخمی ہیں۔

فرانس کے وزیر خارجہ لوراں فیبیوس نے خودکش حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہلاک ہونے والے افراد میں فرانس کا کوئی شہری شامل نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ایک عینی شاہد نے بتایا ہے کہ خودکش حملہ آور تماشائیوں میں بیٹھا تھا جہاں اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا

فرانسیسی وزیر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق’میں سختی سے دہشت گردی کے اس اقدام کی مذمت کرتا ہوں جس میں متعدد افراد مارے گئے اور کئی زخمی ہو گئے۔ ہلاک ہونے والوں میں کوئی فرانسیسی شامل نہیں ہے۔‘

وزیر خارجہ نے واقعے کو ظالمانہ اقدام قرار دیتے ہوئے اس میں ملوث افراد کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کا عہد کیا۔

انھوں نے کہا ہے کہ اس واقعے کی تحقیقات کے لیے کابل اور پیرس میں کرائسس یونٹ قائم کر دیے گئے ہیں۔

افغانستان کے قائم مقام وزیر داخلہ ایوب سالنگی نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ حملہ فرانس کی مدد سے چلنے والے استقلال نامی سکول میں ہوا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ابھی تک ہلاکتوں کی صحیح تعداد کا علم نہیں ہو سکا ہے

کابل میں جمعرات کو ہونے والا یہ دوسرا بم حملہ ہے۔ اسے سے پہلے کابل کے نواح میں ایک خودکش بمبار نے دھماکہ کر کے چھ افغان سیکیورٹی اہلکاروں کو ہلاک کر دیا تھا۔ طالبان نے اس کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

1974 میں بننے والا یہ سکول کابل کے بہترین سکولوں میں شمار ہوتا ہے اور اس میں دو ہزار طلبہ زیرِ تعلیم ہیں۔

ایک عینی شاہد نے بتایا ہے کہ خودکش حملہ آور تماشائیوں میں بیٹھا تھا جہاں اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔

اُدھر افغان حکام نےایران کی سرحد کے قریب ایک اہم قصبے کے بازار پر طالبان کے قبضہ کرنے کے دعوے کو مسترد کر دیا ہے۔

مغربی صوبے ہرات کے گورنر نے بی بی سی کو بتایا کہ افغان فورسز نے شِین ڈنڈ نامی اس قصبے کے بازار پر قبضہ کرنے کی کوشش ناکام بنا دی ہے اور 20 طالبان جنگجوؤں کو بھی ہلاک کر دیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ایک عینی شاہد نے بتایا ہے کہ خودکش حملہ آور تماشائیوں میں بیٹھا تھا جہاں اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا

اسی بارے میں