اتر پردیش: پولیس اہلکار ’ریپ‘ کے الزام میں معطل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اکھلیش یادیو ممتاز بھارتی سیاستدان ملائم سنگھ یادیو کے بیٹے ہیں

بھارت کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش کے وزیراعلیٰ اکھلیش یادیو نےدو پولیس اہلکاروں کو ایک نوجوان لڑکی کے ساتھ ریپ کے الزام میں معطل کر دیا ہے۔

پولیس اہلکاروں پر الزام ہے کہ وہ 14 سالہ لڑکی کو اغوا کر کے تھانے لے آئے جہاں اسے اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔

وزیراعلیٰ اکھلیش یادیو نے پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کرنے کا حکم دیا ہے۔

دونوں پولیس اہلکار اس وقت مفررو ہیں۔

لڑکی کی ماں نے الزام عائد کیا ہے دو کانسٹیبلوں نے ان کی 14 سالہ بیٹی کو بدھ کے روز اس وقت اغوا کر لیا جب وہ گھر سے بیت الخلا میں جانے کے لیے باہر نکلی۔ لڑکی کا تعلق بدیون سے تھا۔

دو سال قبل دہلی میں ایک لڑکی کو بس میں ریپ کرنے کے بعد ہلاک کرنے کے واقع پر ملک میں سخت ردعمل کا اظہار کیا تھا۔

مظاہرین نے حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ جنسی زیادتی کے مرتکب افراد کو کڑی سزائیں دی جائیں۔

گذشتہ ماہ ہی دہلی کی انتظامیہ نے ٹیکسی کی بکنگ کی بین الاقوامی سروس ’اُوبر‘ پر اس وقت پابندی لگا دی تھی جب اس ٹیکسی سروس کے ایک ڈرائیور پر ایک خاتون مسافر کے ساتھ ریپ کا الزام سامنے آیا تھا۔

اسی بارے میں