’مکان کو جنات نے آگ لگائی‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ’تفتیش سے معلوم ہوتا ہے کہ آگ خود لگائی گئی یا پھر غفلت سے لگی‘

اطلاعات کے مطابق دبئی میں مالک مکان معاوضہ حاصل کرنے کے لیے پولیس کو بتاتے ہیں کہ ان کے مکانوں کو جنات نے آگ لگائی۔

خلیج ٹائمز کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لوگ انشورنس کی رقم یا نیا مکان حاصل کرنے کے لیے دعویٰ کرتے ہیں کہ ان کے مکانوں کو جنات نے آگ لگائی۔

پولیس نے اس دعوے کو مسترد کیا ہے اور کہا ہے کہ تفتیش سے معلوم ہوتا ہے کہ آگ خود لگائی گئی یا پھر غفلت سے لگی۔

دبئی پولیس کے فائر ایکسپرٹ احمد محمد کا کہنا ہے: ’ہم سائنسی بنیادوں پر آگ لگنے کے واقعے کی تحقیقات کرتے ہیں۔ کئی واقعات میں لوگ جھوٹ بولتے ہیں اور کہتے ہیں کہ جنات نے آگ لگائی۔‘

یاد رہے کہ 2014 میں ایک شخص نے طلاق دینے کی وجہ یہ بتائی تھی کہ ان کی بیوی پر جنوں کا قبضہ ہے اور وہ اس کے ساتھ سیکس نہیں کرتی۔

اس مقدمے میں عدالت نے اس عورت کو معاوضہ دلوایا تھا لیکن اپیل کورٹ نے یہ معاوضہ منسوخ کرتے ہوئے کہا کہ اس عورت کو جنات کے معاملے میں دیانت داری سے کام لینا چاہیے تھا۔