بنگلہ دیش: پیٹرول بم حملے میں مزید دو افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یہ رواں ہفتے بنگلہ دیش میں پیٹرول بم حملے میں ہلاکتوں کا دوسرا واقعہ ہے

بنگلہ دیش میں پیٹرول بم کے ایک حملے میں مزید دو افراد کی ہلاکت کے بعد ملک میں ایک ماہ سے جاری سیاسی تشدد میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 60 ہو گئی ہے۔

تازہ ترین حملہ جمعرات کو ملک کے شمالی شہر بوگرہ میں ہوا جہاں ایک ٹرک پر پیٹرول بم پھینکا گیا۔

پولیس کے مطابق اس حملے سے ٹرک میں آگ لگ گئی اور اس کا ڈرائیور اور ایک تاجر جل کر ہلاک ہوگئے۔

بدھ کو ہی دارالحکومت ڈھاکہ کے نواح میں ایک ٹرین کو بھی نذرِ آتش کر دیا گیا لیکن اس واقعے میں کسی کے زخمی یا ہلاک ہونے کی اطلاع نہیں ملی۔

بنگلہ دیش میں گذشتہ ماہ حکومت مخالف مظاہروں کے آغاز کے بعد سے بسوں اور گاڑیوں پر حملوں میں اضافہ ہوا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ unk
Image caption پولیس حکام کا کہنا ہے کہ اس حملے کے بعد قریبی دیہاتوں پر چھاپے مارے گئے ہیں

منگل کو بھی ملک کے مشرقی حصے میں چوداگرم نامی قصبے کے قریب بس پر حملے میں سات افراد ہلاک اور 15 زخمی ہوئے تھے۔

پولیس نے اس حملے کے بعد اپوزیشن کی رہنما خالدہ ضیا کے خلاف اس حملے پر اکسانے کا مقدمہ درج کیا ہے، تاہم انھوں نے اس الزام سے انکار کیا ہے۔

ملک میں ان حالیہ مظاہروں کی کال خالدہ ضیا نے ہی گذشتہ ماہ انتخابات کے ایک برس کی تکمیل پر دی تھی۔

بنگلہ دیش میں پولیس نے مظاہروں کے آغاز کے بعد سے اب تک اپوزیشن کے سات ہزار حامیوں کو گرفتار کیا ہے۔

اسی بارے میں