سری لنکن صدر کے بھائی کلہاڑی کے وار سے ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صدر میتھریپالا سری سینا نے خاندان والوں کو سرکاری سکیورٹی فراہم نہیں کی ہے

پولیس کا کہنا ہے کہ سری لنکا کے صدر میتھریپالا سری سینا کے بھائی کلہاڑی کے حملے میں زخمی ہونے کے بعد ہسپتال میں دورانِ علاج دم توڑ گئے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پرینتھا سری سینا پر ان کے آبائی علاقے پولوناروا میں ہونے والے حملے میں ان کے سر پر شدید چوٹ آئی تھی۔

کولمبو گزٹ کے مطابق ان کا کسی سے ذاتی جھگڑا تھا اور حملے کے الزام میں ایک شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

سری لنکا کے صدر اس وقت سرکاری دورے پر چین میں ہیں۔

صدر کے سب سے چھوٹے بھائی جو ایک تاجر تھے، وہ جمعرات کے روز حملے میں زخمی ہوگئے تھے۔

حکومت کے جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ’وہ اپنے دوست کے ساتھ جھگڑے میں زخمی ہوئے تھے۔‘

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ان کو علاج کے لیے کولمبو منتقل کیا گیا تھا جہاں پر ان کے سر کے زخموں کا آپریشن ہوا تھا مگر وہ پھر بھی جانبر نہ ہوسکے اور سنیچر کو دم توڑ گئے۔

سرکاری ذرائع کے مطابق 42 سالہ پرینتھا سری سینا 12 بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹے تھے۔

واضح رہے کہ صدر میتھریپالا سری سینا رواں جنوری میں منعقد ہونے والے صدارتی انتخابات میں ایک کانٹے کے مقابلے کے بعد منتخب ہوئے تھے۔

سابقہ سری لنکن صدور کے برعکس انھوں نے اپنے خاندان والوں کو سرکاری سکیورٹی فراہم نہیں کی اور اپنی ذاتی سکیورٹی میں بھی خاصی کمی کی ہے۔

اسی بارے میں