چین کے پلانٹ میں دھماکہ اور آتشزدگی

تصویر کے کاپی رائٹ Xinhua
Image caption اس پلانٹ میں دو سال کے دوران آتشزدگی کا یہ دوسرا واقعہ ہے

چین کے جنوب مشرقی صوبے فوجيان میں ایک کیمیکل پلانٹ میں دھماکے کے سبب خوفناک آتشزدگی ہوئی ہے۔

یہ دھماکہ ژانگزاؤ میں ایک پلانٹ میں پیر کی شام ہوا۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی شنہوا کے مطابق اس حادثے میں تین افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

اس پلانٹ میں پیراكسلين (پي ایكس) تیار کیا جاتا ہے۔ یہ ایک آتش گیر کیمیائی مادہ ہے جسے پالیسٹر اور پلاسٹک کی چیزیں بنانے میں استعمال کیا جاتا ہے۔

چین میں مقامی افراد اس طرح کے پلانٹ کے قیام کی مخالفت کرتے رہے ہیں۔

گذشتہ سال گوانگڈونگ میں اس حوالے سے مظاہرے بھی ہوئے تھے۔

کئی افراد کا خیال ہے کہ ان پلانٹس کی وجہ سے جو آلودگی پیدا ہوتی ہے وہ صحت کے لیے نقصان دہ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Xinhua
Image caption چین کے ٹیلی ویژن سی سی ٹی نے اس آتشزدگی کی فوٹیج جاری کی ہے جس میں شعلوں کو فضا میں بلند ہوتے دکھایا گيا ہے تاہم اس میں زیادہ معلومات فراہم نہیں کی گئی ہیں

ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ کے مطابق اس پلانٹ میں دو سال کے دوران یہ دوسرا دھماکہ ہے۔

ژوانگزاؤ میں یہ پلانٹ ڈریگن ایرومیٹكس کی نگرانی میں چلایا جا رہا ہے جو آزادانہ طور پر چین میں سب سے زیادہ پي ایكس تیار کرتا ہے۔

ڈریگن ایرومیٹكس نے ابھی تک اس واقعے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

چین کے ٹیلی ویژن سی سی ٹی نے اس آتشزدگی کی فوٹیج جاری کی ہے جس میں شعلوں کو فضا میں بلند ہوتے دکھایا گيا ہے تاہم اس میں زیادہ معلومات فراہم نہیں کی گئی ہیں۔

شنہوا کے مطابق یہ واقعہ مقامی وقت کے مطابق شام سات بجے پلانٹ کے پمپنگ سٹیشن میں پیش آیا۔

شنہوا کے مطابق دھماکہ اتنا زبردست تھا کہ جائے حادثے سے ایک کلومیٹر کے فاصلے پر ایک پیٹرول سٹیشن کی کھڑکی اڑ گئی۔

ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ کے مطابق ایک رہائشی جو بندرگاہ کے اس پار تقریبا 10 کلومیٹر کے فاصلے پر رہتا ہے نے بتایا کہ دھماکہ اتنا شدید تھا کہ اس کا فلیٹ ہل گیا۔

چین میں بغیر اجازت مظاہرہ کرنا غیر قانونی ہے تاہم ماحولیات کے متعلق مظاہروں میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔

اسی بارے میں