نیپال کے زلزلے میں 4000 سے زائد ہلاک، امداد کی اشد ضرورت

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption زلزلے سے متاثرہ نیپال نے مزید امداد کی اپیل کی ہے

نیپال میں پولیس کا کہنا ہے کہ سنیچر کو آنے والے زلزلے میں ہلاکتوں کی تعداد 4000 ہو گئی ہے جبکہ دوردراز کے علاقوں میں سینکڑوں افراد اب بھی ملبے تلے دبے ہوئے ہیں۔

نیپال میں حکام کا کہنا ہے کہ ملک کا تقریباً ہر فوجی اور پولیس اہلکار اس وقت امدادی سرگرمیوں میں حصہ لے رہا ہے۔ نیپال کی وزارتِ داخلہ کے ترجمان لکشمی پرساد دھکل نے بی بی سی کو بتایا کہ ملک کے دور دراز کے علاقوں تک رسائی کے لیے مزید ہیلی کاپٹروں کی ضرورت ہے۔

زلزلے میں ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا گیا ہے۔

نیپال زلزلے سے متاثرہ افراد اور علاقے تصاویر میں

نیپال میں موجود غیر ملکیوں کی شکایت

زلزلے کا پہلے سے خدشہ تھا

زلزلے کے مرکز کے قریب واقع بیشتر دیہات میں تاحال امداد نہیں پہنچ سکی تاہم بین الاقوامی امداد دارالحکومت کھٹمنڈو پہنچنا شروع ہو چکی ہے۔

اس وقت ہزاروں کی تعداد میں افراد نے عارضی خیموں میں پناہ لے رکھی ہیں جبکہ نیپال نے مزید امداد کی اپیل بھی کی ہے۔

نیپال کے نیشنل ایمرجنسی آپریشن سینٹر کے مطابق زلزلے سے 6,500 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق زلزلے سے چین اور بھارت میں بھی درجنوں افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اتوار کو نیپال میں چھ اعشاریہ سات کی شدت سے آنے والے آفٹر شاکس نے متاثرین کو مزید خوفزدہ کر دیا ہے

حکام کے مطابق ماؤنٹ ایورسٹ پر برفانی تودے گرنے کے نتیجے میں 200 سے زائد کوہ پیماؤں کو بچایا جا چکا ہے۔ اس سے پہلے ماؤنٹ ایورسٹ پر برفانی تودے گرنے کے نتیجے میں غیر ملکی کوہ پیماؤوں سمیت 17 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی جا چکی ہے۔

دارالحکومت کھٹمنڈو اس وقت ٹینٹ نما شہر میں تبدیل ہو چکا ہے اور اس خدشے کا اظہار کیا جا رہا ہے کہ ملبے تلے اب بھی ہزاروں افراد دبے ہوئے ہیں۔

ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے قائم وزارت کے چیف رامیشور ڈانگل کے مطابق زخمیوں کی تعداد ساڑھے چھ ہزار سے تجاوز کر چکی ہے۔

امدادی کارروائیاں تیز

زلزلے کے مرکز پوکھرا جو کہ دارالحکومت کھٹمنڈو کے شمال مغرب میں واقع ہے کا راستہ صاف کیا جا رہا ہے اور امدادی ٹیمیں علاقے کی جانب روانہ ہو چکی ہیں۔

ورلڈ وژن نامی امدادی ادارے کے ترجمان میٹ داروس نے بی بی سی کو بتایا کہ پہاڑوں کے قریب واقع گاؤں لینڈ سلائینڈنگ کی وجہ سے متاثر ہوتے رہتے ہیں اور یہ غیر معمولی نہیں کہ کوئی گاؤں جس میں 200 سے 300 یا زیادہ سے زیادہ 1000 افراد موجود ہوں چٹانوں کے گرنے سےمکمل طور پر زمین میں دھنس جائے۔

پوکھرا سے ہیلی کاپٹر کے ذریعے ایک متاثرہ شخص کو محفوظ مقام پر منتقل کیا گیا۔ انھوں نے ورلڈ وژن کو بتایا کہ زلزلے میں گاؤں کا تقریباً ہر گھر متاثر ہوا اور ایک ہزار سے زا‏‏ئد گھر مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں۔

اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ زلزلے سے متاثرہ مغربی نیپال کے پہاڑی علاقوں اور ان کے نواحی دیہات میں بہت زیادہ تباہی ہوئی ہے اور ہلاکتوں کی تعداد مزید بڑھ سکتی ہے۔

گورکھا نامی ضلعے کے افسر پرکاش سوبیدی نے بتایا کہ لینڈ سلائیڈ کی وجہ سے امدادی ٹیموں کو دوردراز علاقوں تک رسائی حاصل کرنے میں ناکامی کا سامنا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ پیر کو موسم صاف ہونے کے بعد دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ کے بیس کیمپ میں پھنسے 210 کوہ پیماؤوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کے لیے وہاں ہیلی کاپٹرز پہنچ رہے ہیں۔

خیال رہے کہ ماؤنٹ ایورسٹ پر برفانی تودے گرنے کے نتیجے میں غیر ملکی کوہ پیماؤوں سمیت 17 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP

پاکستان، بھارت اور چین سمیت متعدد ممالک کی جانب سے نیپال میں امدادی اور ریسکیو ٹیمیں روانہ کی جا رہی ہیں۔ پاکستانی حکومت نے یمن کے بعد اب نیپال میں محصور افراد کے لیے امداد اور ریسکیو ٹیمیں بھیجی ہیں۔

سرکاری ٹی وی پی ٹی وی کے مطابق 43 پاکستانیوں کو سی ون تھرٹی طیارے کے ذریعے پاکستان واپس پہنچایا گیا ہے جبکہ مزید پاکستانیوں کو واپس لایا جائے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP

وطن واپس پہنچنے والے پاکستیانیوں نے بتایا کہ وہاں عوام میں شدید خوف ہے اور بڑے پیمانے پر ہلاکتیں ہوئی ہیں اور بہت لوگ زخمی ہیں جنھیں خوراک اور بنیادی سہولیات کی قلت کا سامنا ہے۔

عالمی امداد

  • بھارت نے ہوائی جہازوں کے ذریعے ادویات، موبائل ہسپتال اور قدرتی آفات سے نمٹنے والے ادارے کے 40 اہلکار بھیجے ہیں۔
  • پاکستان نے چار سی ون تھرٹی طیاروں میں 30 بستروں کا فیلڈ ہسپتال، طبی عملہ اور امدادی سامان نیپال روانہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔ جو لے کر امدادی ٹیمیں نیپال پہنچ گئی ہیں۔
  • امریکی ادارے یو ایس ایڈ کے مطابق امریکہ نے دس لاکھ ڈالر اور ہنگامی صورتحال سے نمٹنے والی ٹیم روانہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔
  • برطانیہ نے امدادی اہلکاروں پر مشتمل آٹھ افراد کی ٹیم بھجوانے کا اعلان کیا ہے۔
  • ناروے نے ساڑھے 20 لاکھ برطانوی ڈالر امداد کا اعلان کیا ہے۔جرمنی، فرانس، سپین اور یورپی یونین نے بھی نیپال کو امداد دینے کا اعلان کیا ہے۔

اسی بارے میں