’شدت پسندوں کے حملے میں آٹھ بھارتی فوجی ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بھارت کی شمال مشرقی ریاستوں میں کئی علیحدگی پسند تنظیمیں سرگرم ہیں

بھارت کی شمال مشرقی ریاست ناگالینڈ میں پولیس کا کہنا ہے کہ مون ضلع میں شدت پسندوں نے آٹھ فوجی جوانوں کو ہلاک کر دیا ہے۔

مارے جانے والے فوجیوں میں سات جوانوں کا آسام رائفلز اور ایک کا صوبائی سرحدی فوج سے تعلق تھا۔

اطلاعات کے مطابق اس حملے میں چھ دیگر فوجی جوان زخمی بھی ہو گئے ہیں جبکہ فوجیوں کا دعویٰ ہے کہ انھوں نے جوابی حملے کیے جس میں ایک حملہ آور ماراگیا جبکہ کئی زخمی ہوئے۔

خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق فوجیوں کو لے جانے والے دو ٹرکوں پر شدت پسندوں نے خود کار ہتھیاروں سے گھات لگا کر حملہ کیا۔

ابھی تک کسی گروہ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے تاہم نیشنلٹ سوشلسٹ کونسل آف ناگالینڈ پر اس کے میں مولوث ہونے کا شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

ناگالینڈ شدت پسند تنظیم این ایس سی این اپنے لیے آزاد ریاست کا مطالبہ کر رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Neelima Vallangi
Image caption ناگالینڈ بھارت کی شمال مشرقی ریاستوں میں سے ایک ہے اور یہاں ایک عرصے سے علیحدگی پسند سورش جاری ہے

اس تنظیم نے گذشتہ ماہ حکومت ہند کے ساتھ جاری امن مذاکرات کے خاتمے کا اعلان کیا تھا اور اس کے بعد سے یہ تیسرا حملہ ہے۔

گذشتہ ماہ کے اوائل میں اس تنظیم نے اروناچل پردیش کے تیراپ ضلعے میں ایک فوجی کانوائے پر شب خون مارا تھا جس میں تین فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے تھے۔

جبکہ گذشتہ سنیچر کو این ایس سی این (کے) کے چار کارکن فوجیوں کے ساتھ تصادم میں مارے گئے تھے۔

ضلع مون، آسام کے دارالحکومت گوہاٹی سے تقریبا 400 کلومیٹر مشرق میں واقع ہے۔

اسی بارے میں