بون لیس چکن کھانے والا کنگ کوبرا

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی کے چڑیا گھر میں راجستھان سے ایک کنگ کوبرا لایا گیا ہے اور اب اس کی مادہ تلاش کی جا رہی ہے۔

13 فٹ طویل اس کنگ کوبرا کو دیکھنے کے لیے بہت سے لوگ چڑیا گھر آ رہے ہیں۔

بھارت میں سانپوں کی 216 اقسام پائی جاتی ہیں، مگر 53 اقسام ایسی ہیں جو زہریلی ہوتی ہیں اور ان میں چار ایسی بھی ہیں جو اگر کسی انسان یا جانور کو کاٹ لیں تو اس سے ان کی موت بھی ہو سکتی ہے۔ انھی میں سے ایک کنگ کوبرا بھی ہے۔

نئی دہلی چڑیا گھر کے پی آر افسر ریاض خان نے بتایا کہ چڑیا گھر میں لایا جانے والا کنگ کوبرا نر ہے۔

ریاض کہتے ہیں: ’ہمارے پاس ویسے تو سات کوبرا ہیں لیکن کنگ کوبرا ایک ہی ہے۔ جنگلوں میں رہنے والا کنگ کوبرا چھپکلیاں اور دیگر جانور کھاتا ہے لیکن ہم اسے بون لیس چکن دے رہے ہیں۔‘

چڑیا گھر میں لائے گئے کنگ کوبرا کو ایک غیر سرکاری تنظیم نے سپیرے سے چھڑوايا تھا اور اس کے بعد اسے نئی دہلی لایا گیا۔

ریاض خان نے بتایا: ’کنگ کوبرا اور سلوتھ بیئر (ریچھ) کو پالنے پر پابندی ہے اگر کسی کے پاس یہ جانور پائے جاتے ہیں تو اس پر قانونی کارروائی کی جا سکتی ہے۔ کنگ کوبرا کو پکڑنا بہت مشکل ہے۔ ہم نے سانپ پکڑنے والے بھی رکھے ہوئے ہیں پر پھر بھی کوئی ہاتھ نہیں آتا۔‘

چڑیا گھر دیکھنے آئی رچا نے بتایا: ’میں نے پہلی بار یہ سانپ دیکھا ہے۔ مجھے اسے دیکھ کر ڈر تو نہیں لگا کیونکہ یہ اب بند ہے لیکن اگر یہ باہر آ جائے تو بہت ڈر لگے گا۔‘

ضمیر نے بتایا کہ کنگ کوبرا کو دیکھ کر اندر سے خوف پیدا ہو گیا ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ اگر یہ سانپ کہیں باہر نظر جائے تو ان کی تو حالت ہی خراب ہو جائے گی۔

چاہنے والوں اور خوف کھانے والوں کی بھیڑ دیکھ کر کنگ کوبرا کو اچھا تو لگ رہا ہو گا لیکن اسے اپنی ’ملکہ‘ کی آمد کا انتظار بھی ہو گا۔