اس بار سب سے چھوٹی بیٹی کے جہیز کیلیے ڈاکہ

تصویر کے کاپی رائٹ MANISH SHANDILYA
Image caption پولیس کے مطابق باپ نے رشتہ داروں کی مدد سے مل کر ڈاکہ ڈالا

انڈیا کی ریاست بہار کے شہر بھاگلپور کی پولیس کا دعویٰ ہے کہ ایک باپ نے بیٹی کا جہیز اکٹھا کرنے کے لیے بینک میں ڈاکہ ڈالا ہے۔

پولیس نے اس معاملے میں چار افراد کی گرفتاری اور ان کے پاس سے چھ لاکھ روپے برآمد کرنے کا بھی دعویٰ کیا ہے۔

بھاگلپور کے سینیئر پولیس اہلکار ضمیر کمار نے بی بی سی کو بتایا کہ کچھ لوگوں نے 26 مئی کو بھاگلپور کے گھنٹہ گھر میں بہار دیہی بینک کو لوٹا تھا۔

پولیس اہلکار کا کہنا ہے کہ ’گرفتار لوگوں نے پوچھ گچھ کے دوران بتایا کہ انہوں نے جہیز کی رقم حاصل کرنے کے لیے ڈاکہ ڈالا تھا۔‘

پولیس کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ اس ڈکیتی کا اہم ملزم كنہيا یادو بینک ڈکیتی سمیت کئی معاملات میں پہلے سے ہی نامزد ہے۔

پولیس کے مطابق كنہیا نے اس بار اپنی سب سے چھوٹی بیٹی کے جہیز کے لیے ڈاکہ ڈال تھا۔

پولیس کے مطابق ڈکیتی کی اس واردات میں اس کے داماد اور دیگر رشتہ دار بھی شامل تھے۔

معلومات کے مطابق كنہیا یادو کو جہیز میں پانچ لاکھ روپے دینے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ڈاکے کے بعد كنہیا نے جہیز کی رقم پہنچانے کے لیے لڑکے والوں سے رابطہ بھی کیا لیکن پولیس کے دباؤ کی وجہ سے ایسا نہیں ہو پایا۔

پولیس كنہیا سمیت دیگر ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار رہی ہے۔

اسی بارے میں