بنگلہ دیش: بھگدڑ مچنے سے 23 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مائمن سنگھ کے پولیس چیف نے اے ایف پی کو بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر غربا اور خواتین ہیں

شمالی بنگلہ دیش کے شہر مائمن سنگھ میں کپڑے مفت تقسیم کرنے کے ایک موقعے پر بھگدڑ مچنے سے 23 افراد ہلاک اور 50 زخمی ہو گئے ہیں۔

سحری کے وقت ایک فیکٹری کے کمپاؤنڈ میں سینکڑوں لوگوں کے داخل ہونے کی کوشش کی وجہ سے یہ حادثہ پیش آیا۔

پولیس نے فیکٹری کے مالک سمیت سات لوگوں کو حراست میں لے لیا ہے۔

مسلمان کے مقدس مہینے رمضان میں بہت سے صاحبِ اقتدار بنگلہ دیشی خیرات کرتے ہیں۔

پولیس نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ فیکٹری مالکان کی جانب سے صبح پونے پانچ بجے مفت کپڑے تقسیم کرنے کے اعلان کے بعد وہاں 1500 افراد جمع ہو گئے تھے۔

بھگدڑ اس وقت مچی جب لوگوں نے زبر دستی فیکٹری کے احاطے میں داخل ہونے کی کوشش کی۔

ٹی وی پر اس واقعے کی دکھائی جانے والی تصاویر میں خون میں لپٹی سینکڑوں جوتیاں اور سینڈل نظر آتے ہیں۔ مقامی ذرائع ابلاغ نے اس فیکٹری کے گیٹ کا نام ’نورانی جوڑا‘ رکھ دیا ہے۔

مائمن سنگھ کے پولیس چیف نے اے ایف پی کو بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر غربا اور خواتین ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ہے۔

اسی بارے میں