ملا اختر کی سربراہی میں طالبان شوریٰ کی ویڈیو جاری

تصویر کے کاپی رائٹ EPA Reuters
Image caption گذشتہ ہفتے ملا عمر کی ہلاکت کی تصدیق کرنے کے بعد طالبان نے ملا اختر منصور کو باضابطہ طور پر تحریکِ طالبان کا سربراہ مقرر کرنے کا اعلان کیا گیا تھا

افغان طالبان نے اپنی شوریٰ کے اجلاس کی ایک غیر معمولی ویڈیو جاری کی ہے جس میں تحریک طالبان کے سینکڑوں اراکین نئے سربراہ ملا اختر منصور سے وفاداری کا اظہار کر رہے ہیں۔

پیر کو جاری ہونے والی ویڈیو میں شوریٰ کے اجلاس میں ملا اختر منصور کو طالبان کا نیا سربراہ تعینات کیا جا رہا ہے لیکن ویڈیو میں اُن کا چہرہ چھپایا گیا ہے۔

افغان طالبان کی جانب سے یہ ویڈیو ایک ایسے موقعے پر جاری کی گئی ہے جب ملا عمر کی ہلاکت کے بعد نئے امیر کی تعیناتی پر اختلافات کی خبریں سامنے آئی ہیں۔

’امن مذاکرات کا عمل دشمن کی پروپیگنڈا مہم ہے‘

’ملا اختر منصور دھیمے مزاج کے مالک اور مذاکرات کے حامی‘

گذشتہ ہفتے ملا عمر کی ہلاکت کی تصدیق کرنے کے بعد طالبان نے ملا اختر منصور کو باضابطہ طور پر تحریکِ طالبان کا سربراہ مقرر کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اس سے قبل طالبان کے سینیئر رہنماؤں نے بی بی سی کو بتایا تھا کہ ملا اختر منصور کو طالبان شوریٰ کی مشاورت کے بغیر تحریک کا نیا سربراہ مقرر کیا گیا ہے۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ یہ ایک غیر معمولی ویڈیو ہے جس میں طالبان کی شوریٰ کا اجلاس ہوتے ہوئے دکھایا گیا ہے تاکہ مخالفین کو یہ یقین دلایا جا سکے کہ نئے سربراہ کو بڑی تعداد میں طالبان اراکین کی حمایت حاصل ہے۔

یاد رہے کہ افغان طالبان نے ہمیشہ تصاویر اور ویڈیو کی مذہبی عقائد کی بنیاد پر مخالفت کی ہے اور طالبان کی جانب سے عموماً جنگی محاذ کی ویڈیو جاری کی جاتی ہیں لیکن کسی اجلاس کی یہ غالباً پہلی ویڈیو ہے۔

اس سے قبل افغان طالبان تحریک کے نئے امیر ملا اختر منصور نے اپنے پہلے آڈیو پیغام میں طالبان سے متحد رہنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی جنگ جاری رکھیں گے۔

Image caption اس سے قبل افغان طالبان تحریک کے نئے امیر ملا اختر منصور نے اپنے پہلے آڈیو پیغام میں متحد رہنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی جنگ جاری رکھیں گے

طالبان کی جانب سے ملا اختر منصور کی تقرری کو تحریک کے بعض سنیئر رہنماؤں نے مسترد کر دیا تھا اور کہا تھا کہ اُن کی تقرری شوریٰ کی مشاورت کے بغیر کی گئی، جبکہ ملا اختر منصور نے اپنے 30 منٹ کے آڈیو پیغام میں کہا تھا کہ جنگجوؤں کو متحد رہنا چاہیے کیونکہ ’ہمارے درمیان تفریق صرف دشمنوں کو ہی خوش کر سکتی ہے۔‘

اسی بارے میں