القاعدہ کا ملا اختر منصور سے وفاداری کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ویب سائٹ پر جاری کیے جانے آڈیو پیغام میں ایمن الظواہری کی تصاویر بھی دکھائی گئی ہیں

شدت پسند تنظیم القاعدہ کے سربراہ ایمن الظواہری نے ایک آڈیو پیغام میں افغان تحریک طالبان کے نئے سربراہ سے وفاداری کا اعلان کیا ہے۔

افغان طالبان کے امیر ملا اختر منصور کی حمایت کا آڈیو پیغام القاعدہ کے میڈیا سیل السحاب کی جانب سے شدت پسندوں کی ویب سائٹوں پر جاری کیا گیا ہے۔

القاعدہ کے سربراہ کی جانب سے گذشتہ سال ستمبر کے بعد منظرعام پر آنے والا یہ پہلا پیغام ہے۔

’ملا اختر منصور باضابطہ امیر مقرر‘ شوریٰ میں اختلاف برقرار

گذشتہ ماہ افغان طالبان تحریک کے سربراہ ملا عمر کے انتقال کے بعد یہ قیاس آرائیاں کی جا رہی تھیں کہ وہ بھی انتقال کر چکے ہیں۔

آڈیو پیغام میں ملا عمر کے انتقال پر تعزیت کرتے ہوئے ایمن الظواہری نے کہا ہے کہ ’القاعدہ کے امیر کے طور پر شیخ (اسامہ بن لادن) کی پیروی کرتے ہوئے آپ کی وفاداری کا عہد کرتے ہیں جس طرح انھوں نے اور ان کے ساتھوں نے ملا عمر سے وفاداری کی تھی۔‘

القاعدہ اور ایمن الظواہری ملا عمر کو جہادیوں کی عالمی تحریک کا سربراہ تصور کرتے تھے تاہم القاعدہ کی مخالف خود کو دولتِ اسلامیہ کہلانے والی تنظیم نے ان کے مقابلے میں اپنی خلافت کا اعلان کر دیا تھا اور اس تنظیم کے سربراہ ابوبکر البغدادی ہیں۔

گذشتہ ماہ افغان طالبان نے اپنے سربراہ ملا محمد عمر کی موت کی تصدیق کے بعد اب باضابطہ طور پر ملا اختر منصور کو تحریک کا نیا امیر مقرر کر دیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption افغان طالبان نے ملا عمر کے انتقال کی تصدیق کے بعد ملا اختر منصور کو نیا امیر منتخب کیا تھا

تاہم طالبان کے سینیئر رہنماؤں نے بی بی سی کو بتایا تھا کہ ملا اختر منصور کو طالبان شوریٰ کی مشاورت کے بغیر تحریک کا نیا سربراہ مقرر کیا گیا ہے۔

امیر کے انتخاب پر طالبان میں اختلافات کی خبروں کی دوران ملا اختر منصور نے ایک آڈیو پیغام میں متحد رہنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ اپنی جنگ جاری رکھیں گے۔

انھوں نے امن مذاکرات کے عمل کو مسترد کرتے ہوئے اسے دشمن کی پروپیگنڈا مہم قرار دیا تھا، تاہم اس کے بعد بھی طالبان میں ان کے انتخاب پر تحفظات کے اظہار کی خبریں سامنے آنے کے بعد ایک ویڈیو جاری کی گئی تھی جس میں تحریک طالبان کے سینکڑوں اراکین کو نئے سربراہ ملا اختر منصور سے وفاداری کا اظہار کرتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔

ملا اختر منصور کے امیر منتخب ہونے کے بعد افغانستان میں تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

اسی بارے میں