ہرات میں دھماکے سے کم از کم 10 بچے ہلاک

Image caption ہرات میں اس سے قبل بھی ایک گیس ٹینکر میں آگ لگی تھی (فائل فوٹو)

افغانستان کے مغربی شہر ہرات کے قریب ایک گیس سٹیشن پر ہونے والے دھماکے میں کم از کم 11 افراد ہلاک ہو گئے ہیں جن میں دس بچے شامل ہیں۔

ہسپتال کے حکام کا کہنا ہے کہ اس میں 18 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

حکام کے مطابق یہ دھماکہ پناہ گزینوں کے ایک کیمپ کے قریب ہوا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر ڈالی جانے والی تصاویر میں فضا میں بلند ہوتے شعلوں کو دیکھا جا سکتا ہے۔

حکام کے مطابق کیمپ کے پاس ہرات کے نواح میں گیس ٹرمینل پر کئی بڑے دھماکے ہوئے ہیں۔

اس کیمپ میں افغانستان میں جاری جنگ کے نتیجے میں بے گھر ہو جانے والے افراد تھے۔

حکام کے مطابق دھماکے ہر چند کے شہر کے نواحی علاقے میں ہوئے تاہم اس کی آواز پورے شہر میں سنی گئی اور رات کی تاریکی میں شعلوں کو آسمان میں بلند ہوتے دیکھا گیا۔

Image caption حکام کے مطابق دھماکے کی آواز پورے ہرات شہر میں سنی گئی

خبر رساں ادارے روئیٹرز کو ہرات کے علاقائی ہسپتال کے ترجمان محمد رفیق شیرازی نے بتایا کہ 11 ہلاکتوں کے علاوہ 18 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

ان تمام لوگوں کا تعلق اس پناہ گزین کیمپ سے ہے جو کہ گیس ٹرمینل کے پاس واقع ہے۔

ابھی دھماکے کی نوعیت واضح نہیں ہو سکی کہ یہ دہشت گردی کا واقعہ تھا یا کوئی حادثہ۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال جنگجوؤں نے ہرات میں بھارتی قونصل خانے کو نشانہ بنایا تھا اور اس سے ایک سال قبل امریکی قونصل خانے کو بھی نشانہ بنایا گیا تھا۔

اسی بارے میں