بھارت میں کمبھ میلے کے دوران سیلفی لینے پر پابندی

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS
Image caption عوام کے لیے سیلفیاں بنانے پر پابندی گوداوری دریا میں ’مقدس غسل‘ کے دنوں میں لگائی جائے گی

بھارت میں ہندوؤں کے اہم مذہبی تہوار کمبھ میلے کے موقع پربھگڈر یا ہنگانی حالات سے بچنے کے لیےسیلفی لینے کے لیے ممنوعہ علاقہ ’سلیفی فری زون‘ بنایا گیا ہے۔

اس پابندی کا اطلاق کمبھ میلے کے موقع پر کیا جا رہا ہے۔ ہر تین سال کے بعد ہندوں کا مذہبی تہوار کمبھ میلا منعقد کیا جاتا ہے اور اس میلے میں تقریباً تین لاکھ سے زیادہ زائرین شرکت کرتے ہیں۔

حکام کے مطابق عوام کے لیے سیلفیاں بنانے پر پابندی گوداوری دریا میں ’مقدس غسل‘ کے دنوں میں لگائی جائے گی۔

منتظمین کا کہنا ہے کہ ایک سروسے سے معلوم ہوا کہ عوام سیلفیاں لینے میں بہت وقت ضائع کرتے ہیں۔ جس سے مجمع کے آگے بڑھنے کی رفتار کم ہو جاتی ہے اور دھکم پیل کی صورت حال پیدا ہوجاتی ہے۔

ریاست مہاراشٹرا کے مختلف علاقوں میں لگے دو میلوں میں ’نو سیلفی زون‘ دیکھے جاسکتے ہیں۔

یہ فیصلہ 100 رضاکاروں کی جانب سے کیے گئے ایک سروے کے بعد کیا گیا۔ یہ تحقیق کومبھاتون گروپ کے اشتراک سے کی گئی جو حکام کے ساتھ مل کر میلے کی نگرانی کے لیے کام کرتا ہے۔

کومبھاتون کے سی ای او نے انڈین ایکسپریس نامی اخبار کو بتایا کہ’13 جولائی سے اب تک ہمارے رضاکاروں کی جانب سے جمع کیے گیے اعدادوشمار سے یہ معلوم ہوا ہے کہ عوام کو سیلفیاں بنانے سے روکنا ضروری ہے۔ کیوں کہ وہ سیلفی بنانے کے لیے خطرناک مقامات پر چڑھنے سے بھی دریغ نہیں کرتے۔‘

ایک مقامی سرکاری اہلکار ڈاکٹر پراون گیدم نے اخبار کو بتایا کہ سیلفی بنانے پر پابندی’صرف مقدس غسل کے دنوں میں ہی لگائی جائے گی کیوں کہ ہم عام دنوں میں تہوار کا مزہ خراب نہیں کرنا چاہتے۔

اسی بارے میں