گوشت گائے کا یا بھینس کا ہے؟

Image caption بھارت کی بیشتر ریاستوں میں گائے کے ذبیحے پر پابندی عائد ہے، بھارت کی اکثریتی ہندو برادری گائے کو ایک مقدس جانور مانتی ہے اور اس کی پوجا کی جاتی ہے

بھارتی بندرگاہوں پر اب لیبارٹری میں اس بات کی جانچ کی جائے گی کہ برآمد کیا جا رہا گوشت گائے کا ہے یا بھینس کا۔

خیال رہے کہ بھارت میں گائے کےگوشت کی برآمدات پر پابندی عائد ہے۔

وزیر زراعت سنجیو کمار بالیان نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ برآمد کیے جانے والے گوشت کی جانچ کرنے والی تجربہ گاہوں سے بندرگاہوں سے گائے کے گوشت کے غیر قانونی برآمدات کو روکا جا سکے گا۔

ان کہنا تھا ’گائے کےگوشت کی غیر قانونی برآمدات کو روکنے کے لیے بندرگاہوں پر لیبارٹریاں بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔‘

گائے کے گوشت کے ایسے جانچ کے مراکز خاص طور پر مغربی شہروں میں ہوں گے۔ بھارت سے برآمد کیا جانے والا زیادہ تر گوشت انھیں علاقوں سے ہوتا ہے۔

دادری قتل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption چند روز پہلے دہلی سے ملحق دادری میں گائے کا گوشت کھانے کی افواہ پر 50 سال کے محمد اخلاق کو ایک ہجوم نے مار مار کر ہلاک کر دیا تھا

چند روز پہلے دہلی سے ملحق دادری میں گائے کا گوشت کھانے کی افواہ پر 50 سال کے محمد اخلاق کو ایک ہجوم نے مار مار کر ہلاک کر دیا تھا۔ اسی ہجوم کے تشدد نشانہ بننے والے ان کا بیٹا دانش شدید طور پر زخمی ہو گیا تھا۔

امریکی محکمہ ذراعت کی جانب سے جاری کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق گائے کے ذبیحے پر پابندی کے باوجود بھارت دنیا میں گائے کا گوشت برآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے۔

بھارت کی بیشتر ریاستوں میں گائے کے ذبیحے پر پابندی عائد ہے۔ بھارت کی اکثریتی ہندو برادری گائے کو ایک مقدس جانور مانتی ہے اور وہاں اس کی پوجا کی جاتی ہے۔

اگرچہ ملک کے تقریباً سبھی حصوں میں بھینس کا گوشت کھایا جاتا ہے اور بڑے پیمانے پر قابل قبول بھی ہے۔

بنیادی غذا

بھارت میں گائے کے گوشت کے تعلق سے بعض حالیہ واقعات کے بعد سے اس عائد پابندی کے بارے میں بڑے پیمانے پر بحث چھڑ گئی ہے۔

اس طرح کے سوالات اٹھ رہے ہیں کہ لوگ کیا کھائیں اور کیا نہیں اس سے متعلق فیصلہ حکومت کو کرنے کا اختیار نہیں ہونا چاہیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گائے کا گوشت چكن اور بکرے کے گوشت کے مقابلے میں قدر سستا ہونے کی وجہ سے غریب مسلمانوں، قبائلیوں اور دلتوں کی بنیادی غذا رہی ہے

گائے کا گوشت چكن اور بکرے کے گوشت کے مقابلے میں قدرے سستا ہونے کی وجہ سے غریب مسلمانوں، قبائلیوں اور دلتوں کی بنیادی غذا رہی ہے۔

سنہ 2015 میں برازیل کے 20 لاکھ ٹن کے مقابلے میں بھارت سے 24 لاکھ ٹن گوشت برآمد ہونے کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔

اطلاعات کے مطابق بھارت میں تقریباً 1،700 ذبحہ خانے ہیں۔ ان میں سے بیشتر ریاست اترپردیش اور مغربی مہاراشٹر میں واقع ہیں۔

اسی بارے میں