سرفنگ کا نیا عالمی ریکارڈ

آسٹریلیا میں تقریباً 320 لوگ ساحل پر سانتا کلاز کے لباس میں موج رانی کے لیے جمع ہوئے اور ایک ساتھ سرفنگ سیکھنے کا ایک نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا۔

خاص بات یہ تھی کہ ان میں سے تقریباً سبھی سانتا کے لباس میں تھے جو کرسمس میلے کی روح کی عکاس ہے۔

عالمی ریکارڈ رکھنے والے ادارے گنیز ورلڈ ریکارڈ نے بی بی سی سے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ سڈنی کی بونڈی بیچ پر منگل کو سرفنگ یا موج رانی کرنے والوں نے نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

منتظمین کا کہنا ہے کہ اس طرح کی کوشش کا ایک مقصد ذہنی امراض کے بارے میں بیداری مہم چلانا ہے۔

ایک مقامی ریٹیلر گروپ سرف سکول سرف چیئرٹی نے اس کی ابتدا کی تھی۔ موج رانی سیکھنے اور سکھانے کی غرض سے تین سکول ایک ساتھ آئے اور لوگوں کو اتنی بڑی تعداد میں جمع کرنے کے لیے سوشل میڈیا کا استعمال کیا۔

ون ویو سرفنگ سکول کے ترجمان اور ذہنی امراض کے تھیرپسٹ جوئل پلگرم نے بی بی سی کو بتایا کہ تقریباً تین برس قبل سرف چيرٹی نے مقامی آبادی کو ایک ساتھ لانے اور ذہنی امراض سے متعلق کلنک ختم کرنے کی غرض سے اس عمل کی ابتدا کی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ گروپ اسی طرح کی ہفتہ وار اجلاس منعقد کرتا ہے اور اس کے لیے شرکا کو عجیب کپڑے پہننے کو کہا جاتا ہے۔

ان کا کہنا تھا ’ہم لوگوں ایک نظام الاوقات اور مقصد فراہم کرتے ہیں جو ذہنی صحت کے لیے کلیدی کردار ادا کرتا ہے، انھیں خالص آ‎سٹریلوی چیزوں میں ملوث ہونے کو بھی کہا جاتا ہے۔‘

اسی برس ساؤتھ ویلز یونیورسٹی نے اپنی ایک تحقیق میں بتایا تھا کہ ون ویو سرفنگ پروگرام کس سخت طرح کے ذہنی امراض میں مبتلا افراد پر اثر انداز ہوتا ہے۔

اس تحقیق کے مطابق اس سے ان کی زندگی میں بہتری آتی ہے، نفسیاتی نشوونما ہوتی ہے، جسمانی فائدہ پہنچتا ہے اور وہ معاشرے سے بھی مربوط ہوتے ہیں۔

اس میں شریک ہونے والے لوگوں کا کہنا تھا وہ اس تجربے سے وہ خوب لطف اندوز ہوئے۔

ایک شخص کا کہنا تھا: ’یہ بہت اچھا تھا، بہت سارے لوگ تھے، خوب مزا آیا۔ خاصا پرجوش تھا یہ سب۔‘

اسی بارے میں