بھارتی مصور چنتن اُپادھیائے دوہرے قتل کے الزام میں گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ PTI

بھارتی مصور چنتن اُپادھیائے کو اُن کی بیوی ہیما اُپادھیائے اور ان کے وکیل ہریش بھمبانی کے قتل میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

کئی روز کی پوچھ گچھ کے بعد ممبئی پولیس نے منگل کے روز اُپادھیائے کو زیرِ حراست لیا۔

اُپادھیائے نے اپنی بیوی اور اُن کے وکیل کے قتل میں ملوث ہونے کی تردید کی ہے۔

11 دسمبر کو مشہور فنکارہ ہیما اپادھیائے اور ان کے وکیل کی لاشیں ایک نالے سے برآمد ہوئی تھیں۔

سینیئر پولیس افسر دھنجے کلکرنی نے بی بی سی کو بتایا کہ چار دیگر افراد کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔

نامہ نگاروں کے مطابق ایک دوسرے سے الگ رہنے والے اس جوڑے کو طلاق کے سلسلے میں سخت عدالتی کارووائیوں کا سامنا تھا۔ ہریش بھمبانی ، عدالت میں ہیما اُپادھیائے کی جانب سے اُن کے کیس کی نمائندگی کررہے تھے۔

ہیما اُپادھیائے نے 2013 میں اپنے شوہر چنتن اپادھیائے پر ہراساں کا کیس بھی درج کرایا تھا. اُن کے مطابق چنتن اپادھیائے ممبئی میں گھر کی دیواروں پر خواتین کی قابلِ اعتراض تصاویر بناتے تھے۔

مذکورہ جوڑے کو اپنی انسٹالیشنز کے ذریعے بھارت اور بیرون ممالک میں سماجی مسائل کے لیے آواز اُٹھانے کے حوالے سے بہت مقبولیت حاصل تھی۔