بھارتی فضائیہ کا اہلکار جاسوسی کے الزام میں گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لیڈنگ ایئر کرفٹسمین رنجیتھ کے کے کو بھٹنڈا کے فضائیہ کے سٹیشن سے حراست میں لیا گیا

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں پولیس کا کہنا ہے کہ بھارتی فضائیہ کے ایک اہلکار کو جاسوسی کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

دہلی پولیس کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق فضائیہ کے لیڈنگ ایئر کرافٹسمین رنجیتھ کے کے کو ریاست پنجاب کے شہر بھٹنڈا سے حراست میں لیا گیا۔

رنجیتھ کے کے نے بھارتی فضائیہ میں سنہ 2010 میں شمولیت اختیار کی تھی اور وہ بھٹنڈا ایئرفورس سٹیشن پر تعینات تھے۔

پولیس کے مطابق ابتدائی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ رنجیتھ کے کے کو ’سرحد پار‘ سے تعلق رکھنے والے جاسوسوں نے بے وقوف بنایا ہے۔

پولیس کے مطابق یہ اطلاعات موصول ہوئی تھیں کہ چند حاضر سروس اہلکار کو ’ہنی ٹریپ‘ میں پھنسا کر جاسوسی کا کام لیا جا رہا ہے جس کے بعد دہلی پولیس کی کرائم برانچ، ملٹری انٹیلی جنس اور فضائیہ کی مشترکہ کارروائی کے بعد جاسوسی کا نیٹ ورک توڑا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ امر سامنے آیا ہے کہ لڑکیوں کے نام اور تصاویر والے اکاؤنٹس کے ذریعے دفاعی اہلکاروں کے ساتھ دوستی کے بعد انھیں جاسوسی کے جال میں پھنسایا جاتا رہا۔

دہلی پولیس جوائنٹ کمیشنر رویندر یادو نے بیان میں کہا ہے کہ ’ایل اے سی رنجیتھ کے کے نے فضائیہ کی حالیہ مشقوں، جہازوں کی نقل و حمل اور فضائیہ کے مختلف یونٹس کی تعیناتیوں سے متعلق معلومات فراہم کرنے کا جرم قبول کیا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption پولیس کا کہنا ہے کہ دفاعی اہکاروں کے ساتھ دوستی کے بعد جاسوسی کے جال میں پھنسایا جاتا ہے

رویندر یادو کے مطابق ’ان معلومات کے بدلے میں انھیں انھیں مالی فوائد پہنچائے گئے۔‘

پولیس کا کہنا ہے کہ رنجیتھ سے دامنی میکناٹ نامی ایک خاتون کے ذریعے رابطہ کیا گیا، جس نے خود کو برطانیہ میں قائم ایک میڈیا کے ادارے سے اپنا تعلق ظاہر کیا اور ان سے مالی معاونت کے بدلے فضائیہ کے بارے میں معلومات طلب کیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رنجیتھ کو ان کے موبائل پر چند مرتبہ فون کالز بھی کی گئی جس میں برطانیہ میں قائم ایک میگزین کی اعلیٰ عہدیدار دامنی میکناٹ کی شناخت ظاہر کرتے ہوئے برطانوی انگریزی لہجے میں خاتون نے ان سے معلومات حاصل کی۔

رنجیتھ کا انٹریو بھی کیا گیا اور ان سے کہا گیا کہ یہ معلومات شائع کی جائیں اور اس کے بدلے میں انھیں مالی فائدہ بھی حاصل ہوگا۔

اسی بارے میں