چین میں لینڈ سلائیڈ،’غفلت کے مرتکب‘ 11 افراد گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption 20 دسمبر کو پیش آنے والے حادثے میں 74 افراد ہلاک یا لاپتہ ہوئے ہیں

چین میں حکام نے جنوبی شہر شینزین کے صنعتی علاقے میں لینڈ سلائیڈ کے واقعے میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کے الزام میں 11 افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

شینزن کے پراسکیوٹر نے بتایا کہ پکڑے جانے والے افراد میں زمین کی بھرائی کے کام کے نگران اور ملبہ اُٹھانے والی کمپنی کے سربراہ اور اُن کے نائب سمیت سات دیگر لوگ شامل ہیں۔

لینڈ سلائیڈنگ سے ہونے والی تباہی تصاویر میں

حکام کا کہنا ہے کہ اِن ملزمان کی غفلت بڑے حادثے کا سبب بنی اور اسی الزام کے تحت انھیں حراست میں لیا گیا ہے۔

یہ حادثہ 20 دسمبر کو اُس وقت پیش آیا جب شدید بارشوں کے نتیجے میں ایک پہاڑی کے ساتھ زیر تعمیر عمارتوں کے تعمیراتی سامان کے ملبے پر مشتمل تودہ رہائشی علاقے پر آ گرا تھا اور اس حادثے میں 74 افراد ہلاک یا لاپتہ ہوئے ہیں۔

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

یہ باضابطہ گرفتاریاں اِس بات کے تین روز بعد عمل میں آئی ہیں، جب چین کے ذرائع ابلاغ میں اِس بات کا ذکر کیا جا رہا تھا کہ پولیس حادثے میں ملوث 12 افراد کے خلاف ’زبردست اقدامات‘ کر رہی ہے۔

خیال کیا جارہا ہے کہ گرفتار ہونے والے 11 افراد اِن میں سے ہی ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ 20 دسمبر کا سانحہ انسانی غفلت کا نتیجہ ہے، اور اِس بات کا غالب امکان ہے کہ جو افراد اِس میں ملوث ہیں اُن کو سخت سے سخت سزا دی جائے۔

حادثے کے ایک ہفتے بعد حادثے کی جگہ پر کام کرنے والے ایک اہلکار نے بظاہر چھلانگ لگا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا تھا۔

تاہم یہ بات واضح نہیں ہے کہ اُن سے حادثے میں ملوث ہونے کے بارے میں تفتیش کی جارہی تھی یا نہیں۔

حکام نے عوام سے اپیل ہے کہ وہ دیگر مشتبہ افراد کو تلاش کرنے میں پولیس کی مدد کریں، جو بظاہر فرار ہیں۔

اسی بارے میں