ہلمند: امریکی خصوصی فورسز پر حملہ، ایک ہلاک

ہلمند تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ہلمند کو طالبان کا گڑھ سمجھا جاتا ہے

امریکی فوج کے مطابق افغانستان کے جنوبی صوبے ہلمند میں ایک کارروائی کے دوران امریکہ کی خصوصی افواج کا ایک اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہوگئے ہیں۔

یہ واقعہ افغان مرجاہ شہر کے قریب پیش آیا ہے۔

ایک امریکی اہلکار نے کہا ہے کہ ان فوجیوں پر جب حملہ ہوا تو وہ انسدادِ دہشت گردی کے ایک آپریشن میں حصہ لے رہے تھے۔

اس حملے کے بعد جب طبی امداد لے کر ایک ہیلی کاپٹر وہاں پہنچا تو اسے بھی نقصان پہنچا۔

امریکی فوج کے ترجمان بریگیڈیئر جنرل ولسن شوفنر نے کہا ہے کہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ایک فوجی ہلاک ہو گیا ہے: انہوں نے کہا ’ہم اس نقصان پر بہت افسردہ ہیں۔۔۔ ہماری دلی ہمدردیاں ان کے خاندان اور دوستوں کے ساتھ ہیں۔‘

کئی رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر بھی فائرنگ کی زد میں آ گیا تھا۔

امریکی ملٹری کمانڈ کے ایک ترجمان نے اس بات کی تصدیق کی کہ ہیلی کاپٹر اتار لیا گیا تھا لیکن انھوں نے یہ بھی کہا کہ اس میں کوئی مکینیکل مسئلہ ہو گیا تھا۔ ’اسے مار گرایا نہیں گیا۔ وہ خود ہی حفاظت سے اترا۔‘

امریکہ کی سربراہی میں نیٹو افواج نے 2014 میں افغانستان چھوڑ دیا تھا لیکن 12000 کے قریب بین الاقوامی فوجی ابھی بھی وہاں تعینات ہیں اور طالبان کے خلاف مقامی فورسز کی مدد کر رہے ہیں۔

ان میں سے کچھ ہلمند میں انسدادِ دہشت گردی کے لیے تعینات کیے گئے ہیں۔

حال ہی میں امریکی خصوصی دستے ہلمند میں طالبان جنگجوؤں سے برسرِ پیکار بھی رہے ہیں۔