انتہائی سکیورٹی میں بھارت کا جشن یوم جمہوریہ

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption یہ بھارت کا 67 واں یوم جمہوریہ ہے اور بھارتی شہری اس کا جشن منا رہے ہیں

بھارت منگل کو اپنا 67 واں یوم جمہوریہ منا رہا ہے۔ اس موقع پر صدر پرنب مکھرجی نے بھارتی ترنگے کی پرچم کشائی کی اور روایتی طور پر 21 توپوں کی سلامی لی۔

یوم جمہوریہ کے مہمان خصوصی کے طور پر فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند بھارتی صدر، وزیر اعظم اور بیرون ملک سے آئے دیگر سفارتکاروں کے ساتھ راج پتھ پر منعقد پریڈ کا لطف لے رہے ہیں۔

اس بار کی خاص بات پریڈ میں فرانس کے فوجی دستے کی شمولیت ہے جو بھارتی فوجی ٹکڑیوں کے ساتھ پریڈ میں حصہ لے رہی ہے۔

اس کے ساتھ مرکزی ریزرو پولیس فورس کا خواتین دستہ اور فوج کے ڈاگ سکواڈ کو بھی پریڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

یوم جمہوریہ کے موقع پر دارالحکومت دہلی میں سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق 50 ہزار سکیورٹی اہلکار کو تعینات کیا گیا ہے جن میں 15 ہزار نیم فوجی دستے سے تعلق رکھتے ہیں۔

Image caption سکیورٹی کے لیے چپے چپے کی تلاش لی گئی ہے

پریڈ کے روپ پر تقریباً 15 ہزار سی سی ٹی وی کمیرے نصب کیے گئے ہیں تاکہ ساری نقل و حرکت پر نظر ہو۔

اس موقع پر آج سے دہلی کے تاریخی لال قلعے میں تین دن کا ’بھارت پرو‘ تہوار شروع ہو رہا ہے۔

جبکہ سرکاری ٹی وی پرسار بھارتی یوم جمہوریہ کے دن کلاسیکی موسیقی کے 24 گھنٹے چلنے والے چینل ’راگم‘ کا آغاز کر رہا ہے۔ یہ آکاش وانی (آل انڈیا ریڈیو) کی ویب سائٹ اور ڈی ٹی ایچ کے ذریعہ دستیاب ہوگا۔

یوم جمہوریہ سے قبل والی شام کو صدر پرنب مکھرجی نے اپنے خطاب میں پڑوسی ممالک کے ساتھ تمام مسائل کے حل کے لیے بات چیت کی اہمیت پر زور دیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’گولیوں کی بوچھار کے درمیان بات چیت ممکن نہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption صدر جمہوریہ پرنب مکھر جی نے پیر اور منگل کی درمیانی شب کو ملک سے خطاب کیا

خیال رہے کہ حال ہی میں وزیر اعظم نریندر مودی نے لاہور کا دورہ کیا اور پاکستان کے ساتھ جامع مذاکرات شروع کرنے کا اعلان کیا گیا۔

لیکن اس کے کچھ دنوں بعد پنجاب کے پٹھان کوٹ میں ائیر بیس پر ہونے والے حملے کے بعد دونوں ممالک کے خارجہ سیکرٹریوں کے اجلاس کو ملتوی کر دیا گيا۔

صدر نے اپنی تقریر میں کہا: ’انتہا پسندی اس کینسر کی طرح ہے، جسے آپریشن سے کاٹ کر باہر نکال دینا چاہیے۔‘

انھوں نے کہا کہ ’خشک سالی، سیلاب اور بین الاقوامی کساد بازاری کے باوجود بھارت نے 7.30 فیصد کی ترقی کی شرح حاصل کی تاہم معیشت کو مزید مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اس موقعے پر راگم کا افتتاح ہو رہا ہے جو کہ 24 گھنٹے کلاسیکی موسیقی کا چینل ہے

انھوں نے کہا کہ اقتصادی صلاحات کو آگے لے جانے کے لیے تمام سیاسی اختلافات کو پیچھے چھوڑ دینا چاہیے۔

جشن یوم جمہوریہ سے قبل شمالی بھارت میں ہائی الرٹ جاری کیا گیا تھا اور چپے چپے پر پولیس اور فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔

اس موقعے پر بھارت کی مختلف ریاست کی جانب سے جھانکیاں نکالی جاتی ہیں اور اس میں بھارت اپنی فوجی قوت کا بھی مظاہرہ کرتا ہے۔

اسی بارے میں