عبداللہ عبداللہ پانچ روزہ دورے پر بھارت میں

تصویر کے کاپی رائٹ ceo
Image caption مودی کے علاوہ عبداللہ عبداللہ بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج سے بھی ملاقات کریں گے

افغانستان کے چیف ایگزیکٹو آفیسر اور وزرا کی کونسل کے سربراہ عبداللہ عبداللہ پانچ دن کے دورے پر اتوار کو بھارت پہنچ گئے ہیں جہاں وہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ ملاقات کریں گے۔

بھارتی خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق عبداللہ عبداللہ بھارتی وزیر اعظم کے ساتھ اہم علاقائی اور دو طرفہ امور پر گفتگو کریں گے جن میں سکیورٹی کے شعبے تعاون بھی شامل ہے۔

خیال رہے کہ افغان کے وزیر کی بھارت آمد نریندر مودی کے کابل کے سفر کے تقریبا ایک ماہ بعد ہوئی ہے۔ نریندر مودی نے اپنے دورے میں افغانستان کی پارلیمان کی نئی عمارت کا افتتاح کیا تھا جسے بھارتی امداد سے تعمیر کیا گيا ہے۔

افغانستان کے چیف ايگزیکٹو بنیادی طور پر جے پور میں ہونے والے دہشت گردی مخالف کانفرنس میں شرکت کے لیے آئے ہیں۔ اس کانفرنس کو انڈیا فاؤنڈیشن اور سردار پٹیل یونیورسٹی آف پولیس سکیورٹی اینڈ کرمنل جسٹس کے زیر اہتمام انعقاد ہو رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption تقریبا ایک ماہ قبل بھارتی وزیر اعظم نے کابل کا دورہ کیا تھا

وہ جے پور کے لیے منگل کو روانہ ہوں گے۔

بھارت نے افغانستان کو گذشتہ ماہ تین ایم آئی -35 ہیلی کاپٹر دیا تھا۔ اب یہ پوری طرح سے جنگ زدہ ملک میں دہشت گرد مخالف کارروائی کے لیے تیار ہے۔

اعلی سطحی بات چیت کے دوران بھارت اور افغانستان کے درمیان سکیورٹی کے شعبے تعاون کے ساتھ دفاعی اور مہلک ہتھیار میں تعاون کے سلسلے میں اضافے پر بھی غور کیا جائے گا۔

اس سے قبل امریکی وزیر دفاع نے کہا ہے کہ افغانستان کو آنے والے وقت میں نازک صورت حال کا سامنا ہے کیونکہ جنگ کا موسم سامنے ہے۔

ایشٹن کارٹر نے کہا کہ انھوں نے اس بارے میں افغان صدر عبدالغنی اور چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ سے رابطہ کیا ہے اور کابل اور واشٹنگٹن اس کے لیے پہلے سے تیاری کر سکتے ہیں۔

اسی بارے میں