چین میں 7.6 بلین ڈالر کا ’فراڈ‘، 21 افراد گرفتار

Image caption سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق تحقیقات میں سامنے آیا ہے کہ ویب سائٹ پر موجود 95 فی صد سے زائد سرمایہ کاری کی پیشکش جعلی تھیں

چینی حکام نے ایک آن لائن فنانس سکیم میں ملوث 21 افراد کو گرفتار کرلیا ہے جن پر نو لاکھ سرمایہ کاروں سے تقریباً ساڑھے 7.6 ارب ڈالر کے فراڈ کا شبہ ظاہر کیا گیا ہے۔

یہ 21 افراد ژوباؤ کے لیے کام کرتے ہیں جو ایک ہی طرح کے قرض دہندہ ہوتے ہیں جنھیں چین کے سرکاری ذرائع ابلاغ میں بڑے پیمانے پر پونزی سکیم کے طور پر بیان کیا جاتا ہے۔

ژباؤ کو آن لائن فنانسنگ کے کاروبار سے وابستہ چین کی سب سے بڑی کمپنی سمجھا جاتا ہے۔

سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق تحقیقات میں سامنے آیا ہے کہ ویب سائٹ پر موجود 95 فی صد سے زائد سرمایہ کاری کی پیشکش جعلی تھیں۔

چینی ٹیلی ویژن نے کمپنی کے دو سابق ملازمین کے اقبالی بیان نشر کیے ہیں۔ یہ ملازمین اینوئی صوبے میں کام کرتے تھے۔

اس کمپنی کو ڈِنگ نِنگ جو چین کی فرم ژوچنگ گروپ کے چیئرمین ہیں، نے سنہ 2014 میں شروع کیا۔ نامہ نگاروں کے مطابق گرفتار ہونے والوں میں وہ بھی شامل تھے۔

بڑی تعداد میں چین کا بڑھتا ہوا متوسط طبقہ آن لائن سرمایہ کاری کی سکیموں کی جانب متوجہ ہوا ہے۔ کیوں کہ لوگ فوری طور پر اپنی دولت میں اضافے کرنا چاہتے ہیں۔

لیکن حکام ویلتھ منیجمنٹ کی صنعت کو منظم بنانے کے لیے کوشش کررہے ہیں جس کی مالیت کا تخمینہ 20 کھرب 50 کروڑ ڈالر سے زیادہ ہے۔