’مودی جی شکریہ لیکن سالگرہ آج نہیں ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اشرف غنی نے شکریہ کے ساتھ تصحیح کی کہ ان کی سالگرہ تو 19 مئی کو ہوتی ہے

کہتے ہیں کہ سوشل میڈیا کی طاقت سرحدوں سے بالا ہے اور سفارت کاری سے لے کر عسکری سرگرمیوں کے لیے اب اسے ہی استعمال کیا جاتا ہے۔

اس کی سب سے بڑی مثال بھارت کے سوشل وزیراعظم نریندر مودی ہیں جن کی سیلفیوں اور ٹویٹس نے انھیں روایتی میڈیا کے رحم و کرم پر ہونے کی بجائے انھیں فالو کرنے پر لگا رکھا ہے۔

مودی طاقت کے شیدائی، شہرت کے جادوگر ’نریندر مودی بزدل اور نفسیاتی مریض ہیں‘

تازہ واردات میں نریندر مودی نے بارہ بجتے ہی افغان صدر اشرف غنی کو سالگرہ کی مبارکباد دے ڈالی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

نریندر مودی کے آفیشل اکاؤنٹ سے کی گئی ٹویٹ میں کہا گیا ’ہیپی برتھ ڈے اشرف غنی، آپ کی لمبی عمر، بہترین صحت اور آنے والے زندگی کے خوش وخرم سفر کے لیے دعا گو۔‘

مگر یہاں بھی لگتا ہے کہ مودی سے اکثر سوشل میڈیا کی بریکنگ سے پہلے نیوز بریک کرنے کے شوقین حضرات والی غلطی سرزد ہوئی۔

بجائے اس کے کہ وہ روایتی طریقے استعمال کرتے لگتا ہے کہ شاید انھوں نے گوگل کیا اور اس پر آنے والے پہلے سرچ رزلٹ پر ٹویٹ داغ دی۔

یہ تو بھلا ہو اشرف غنی کا جنھوں نے شکریہ کے ساتھ تصحیح کی کہ ان کی سالگرہ تو 19 مئی کو ہوتی ہے۔

انھوں نے جواباً ٹویٹ کی ’گو کہ میری سالگرہ 19 مئی کو ہوتی لیکن میں پھر بھی آپ کے ان مہربان الفاظ کا شکریہ ادا کرنا چاہوں گا۔‘

شکر کریں وزیراعظم نواز شریف کی سالگرہ والے دن کی طرح طیارہ کابل کی جانب نہیں موڑ دیا تاکہ صبح کا ناشتہ وہاں کر سکیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

اب یا تو گوگل یا وکیپیڈیا کی خیر نہیں یا اس ریسرچر کی جس نے یہ معلومات کا سکُوپ لیا تھا۔

اسی بارے میں