سوتیلی بیٹی کا قتل، پیٹر مکھرجی پر مقدمہ درج

Image caption شینا بورا قتل کیس میں پیٹر مکھرجی کی اہلیہ اندرانی مکھرجی پہلے ہی اہم ملزم ہیں اور منگل کے روز پیٹر کو بھی اس کیس میں ملزم بنایا گیا ہے

بھارت کے مرکزی تفتیشی ادارے سی بی آئی نے ممبئی کے مشہور شینا بورا قتل کیس میں میڈیا کی معروف شخصیت پیٹر مکھرجی کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کر لیا ہے۔

شینا بورا قتل کیس میں پیٹر مکھرجی کی اہلیہ اندرانی مکھرجی پہلے ہی اہم ملزم ہیں اور منگل کو پیٹر کو بھی اس کیس میں ملزم نامزد کر دیا گیا ہے۔

پیٹر مکھرجی بھارت میں روپرٹ مرڈوک کے سٹار نیٹ ورٹ کے سی ای او تھے اور انھیں گذشتہ نومبر میں گرفتار کیا گيا تھا۔

انھوں نے اخبار انڈین ایکسپریس کو بتایا کہ وہ اب بھی اپنے پہلے بیان پر قائم ہیں کہ ان کا اس قتل سے کوئی واسطہ نہیں ہے۔

اندراني مکھرجی، ان کے ڈرائیور شيامور رائے اور ان کے سابق شوہر سنجیو کھنّہ پر اندراني کی بیٹی شینا بورا کا قتل کرنے کا الزام ہے۔

24 سالہ شینا بورا 2012 میں اچانک غائب ہو گئی تھیں اور پھر ضلع رائے گڑھ میں ایک لاش ملی تھی۔

فورینسک تحقیقات کے بعد اس بات کی تصدیق ہو گئی ہے کہ وہ لاش شینا بورا ہی کی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ FACEBOOK PAGE OF INDRANI MUKHERJEE
Image caption شینا بورا قتل کیس کے حوالے سے پیٹر مکھرجی کی اہلیہ اندرانی پہلے ہی سے جیل میں ہیں

اس معاملے میں جب نومبر 2015 میں پیٹر مکھرجی کو گرفتار کیا گیا تھا اس وقت سی بی آئی نے دعویٰ کیا تھا کہ شینا کے قتل میں پیٹر کا اہم کردار رہا ہے۔

تفتیش کرنے والے حکام کے مطابق اپنی گرفتاری کے وقت پیٹر اندراني سے فاصلہ قائم کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔

سی بی آئی کے مطابق تفتیش کے دوران پیٹر نے اندراني کے ساتھ برطانیہ اور بھارت میں سرمایہ کاری کی معلومات تو فراہم کیں لیکن پیسہ کن ذرائع سے آیا، اس بارے میں کچھ نہیں بتایا۔

پیٹر مکھرجی پر یہ الزام بھی عائد کیا گیا ہے کہ انھوں نے شینا کے قتل کے بعد ان کے پرس سے ملنے والے موبائل فون اور دیگر چیزیں ضائع کر دی تھیں۔

اس سنسنی خیز قتل معاملے کی تفتیش ممبئی کے اس وقت کے پولیس کمشنر راکیش ماریا کر رہے تھے۔ بعد میں مہاراشٹر حکومت نے تفتیش کی ذمہ داری سی بی آئی کو سونپ دی تھی۔

اسی بارے میں