’دہلی میں پینے کا پانی ختم ہو گیا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہریانہ میں جاری احتجاج کے باعث دہلی کو پانی کی فراہمی متاثر ہوئی ہے

دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا ہے کہ دہلی میں پینے کا پانی تقریبا ختم ہو گیا ہے کیونکہ مظاہرین نے مونک نامی نہر کو بند کر دیا ہے جہاں سے دہلی کو پینے کا پانی سپلائی ہوتاہے۔

انھوں نے کہا ’ہریانہ کی تحریک کی وجہ سے دہلی کو پانی نہیں مل رہا ہے۔ اس کی وجہ سے ٹریٹمنٹ پلانٹ میں بھی پانی تقریبا ختم ہو گیا ہے۔‘

اسی سبب پیر کو دہلی کے تمام سکول کے بند رکھنے کا اعلان کیا گيا ہے۔

ہریانہ کے ڈائرکٹر جنرل آف پولیس وائی پی سنگھ نے کہا کہ ریاست میں جاری احتجاج کے باعث دہلی کو پانی کی فراہمی متاثر ہوئی ہے۔

خبر رساں ادارے اے این آئی کے مطابق انھوں نے بتایا کہ حالات قدرے بہتر ہوئے ہیں۔

انھوں نے کہا ’ہماری ترجیحات میں آج دہلی کے لیے پانی کی سپلائی جاری کرنا ہے۔‘

خیال رہے کہ بھارتی ریاست ہریانہ میں ریزرویشن تحریک چلانے والے جاٹوں نےساری ریاست کی ناکہ بندی کر رکھی ہے اور ریاست کو دوسرے ملک سے ملانے والی شاہراہوں اور ریلوے لائنوں کو بند کر دیا گیا ہے۔

اسی بارے میں